اسحاق ڈارکےخلاف اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت 23 فروری تک ملتوی

 

تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے حوالے سے نیب ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کی۔

عدالت میں سماعت کے دوران نیب کے تفتیشی افسر نادرعباس عدالت میں پیش ہوئے اور ضمنی ریفرنس دائر کرنے کے لیے مہلت مانگ لی۔

نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ تفتیشی افسر کے علاوہ صرف ایک گواہ انعام الحق باقی ہے جس کا بیان ریکارڈ نہیں ہوا۔

انہوں نے عدالت کو بتایا کہ گواہ کی طبعیت خراب تھی لیکن اب وہ بہترہے لیکن اس کے باوجود عدالت میں پیش نہیں ہوا، نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ گواہ کو طلب کیا جائے، بے شک عدالت وارنٹ گرفتار جاری کردے۔

احتساب عدالت نے استغاثہ کے گواہ کو پیش ہونے کے لیے آخری موقع دیتے ہوئے آئندہ سماعت پرگواہ کو بیان ریکارڈ کروانے کے لیے طلب کرلیا

بعدازاں عدالت نے سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت 23 جنوری تک ملتوی کردی۔

اس سے قبل آج اسحاق ڈار کے خلاف نیب ریفرنس کی سماعت کا آغاز ہوا تو نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ گواہ راستے میں ہے، عدالت پہنچنے میں کچھ وقت لگے گا، لہذا کچھ وقت دیا جائے۔

عدالت نے نیب پراسیکیوٹر نیب کی استدعا منظور کرتے ہوئے ریفرنس کی سماعت میں ساڑھے گیارہ بجے تک کا وقفہ کردیا تھا۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.