اسلام کی حقیقی تصویر اعلیٰ اخلاق اور بہترین سلوک و برتاؤ ہے، خطبہ حج

مکہ مکرمہ: حج کے رکن اعظم وقوف عرفہ کے دوران مسجد نبوی کے امام شیخ حسن بن عبدالعزیز آل الشیخ نے خطبہ حج دیتے ہوئے کہا کہ اسلام کی حقیقی تصویر اعلیٰ اخلاق اور بہترین سلوک و برتاؤ پر مشتمل ہے۔

خطبہ حج

اللہ تقوی اختیار کرنے والوں کو پسند کرتا ہے، تقویٰ اختیار کرو تاکہ تم فلاح پاؤ، تمام انبیا نے اللہ کی وحدانیت کی تعلیم دی۔ 

اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے نماز قائم کرو بے شک نماز برائی اور بے حیائی سے روکتی ہے، فرمان باری تعالیٰ ہے اے ایمان والوں تم پر روزے رکھنا فرض کیا گیا جیسے تم سے پہلے امتوں پر کیے گئے تھے۔

اسلام کی حقیقی تصویر اعلیٰ اخلاق اور بہترین سلوک و برتاؤ پر مشتمل ہے، کوئی بھی امت دلوں میں اخلاق کا بیج بوئے بغیر صالح شہری پیدا نہیں کرسکتی۔

دین اسلام خیر اور احسان پر ابھارتا ہے، کسی بھی انسان پر ظلم کرنے اور سرکشی چھوڑنے کا کہتا ہے، اسی لیے امت مسلمہ ایک امت ہے، دین اسلام ایک رب کی طرف متوجہ ہونے، ایک نبی کی پیروی کرنے اور ایک کتاب سے رہنمائی حاصل کرنے کا کہتا ہے۔

اللہ تعالیٰ نے افوہوں کی تصدیق کرنے سے منع کیا، دو لڑنے والوں میں صلح کرنے، مخلوق کا مذاق اڑانے، بدگمانی، تکبر اور چغل خوری سے منع کیا،

اللہ رب العزت نے ارشاد فرمایا، یقیقنا یہ قرآن وہ راستہ دکھاتا ہے جو بہت سیدھا ہے، شریعت نے دھوکہ دہی، سود خوری، خرید و فروخت کی مجھول شکلوں سے منع کیا اور کاروباری لین دین کے حقوق کو لکھنے کا حکم دیا۔

ہماری کامیابی قرآن و سنت پر عمل کرنے میں ہے، اخلاق فاضلہ کادرس دیں ،آنےوالی نسل کو اچھے اخلاق کی تعلیم دیں، رسول پاکﷺ نے اپنے خطبہ حج میں حسن اخلاق پر زور دیا۔

اللہ تعالیٰ نے والدین کے احترام اور خیال رکھنے کی تلقین کی ہے، اسلام نے میاں بیوی کے رشتے میں میانہ روی اور محبت پر زور دیا۔

اسلام نے بے ایمانی کرنے والوں کو سخت عذاب کی تنبیہ دی اور معافی اور درگزر سے کام لینے پر زور دیا، معاشرے کے امن کے لیے ہر مسلمان کو کوشش کرنی چاہیے۔


عازمین عرفات سے مزدلفہ روانہ ہوں گے

میدان عرفات میں موجود 20 لاکھ کے لگ بھگ عازمین ظہر اور عصر کی نماز ایک ساتھ ادا کریں گے بعدازاں عازمین حج غروب آفتاب کے ساتھ ہی مزدلفہ روانہ ہوں گے جہاں وہ نمازِ مغرب اور عشا قصر کے ساتھ ایک ساتھ پڑھیں گے، عازمین رات بھر کھلے آسمان تلے قیام کریں گے اور رمی کے لیے کنکریاں چنیں گے۔

دس ذی الحج کو طلوع آفتاب کے بعد حجاج کرام مزدلفہ سے رمی کے لیے جمرات جائیں گے پھر قربانی کے بعد سر منڈوا کر احرام کھول دیں گے اور طواف زیارت کریں گے۔

آج صبح مکہ مکرمہ میں غلاف کعبہ کی تبدیلی کی روح پرور تقریب منعقد ہوئی، غلاف کعبہ کی تیاری میں 120 کلو سونا اور 100 کلو چاندی استعمال کی گئی۔

واضح رہے کہ اس سال سعودی حکام نے فرزندان اسلام کے لیے خصوصی سہولیات فراہم کی ہیں، تاکہ مناسک حج کی ادائیگی کے دوران کسی قسم کی دشواری کا سامنا نہ ہو، اس سلسلے میں ایک ہیلپ لائن کے قیام کے ساتھ ساتھ خصوصی حج ایپلی کیشن بھی متعارف کروائی گئی ہے۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*