اے ڈی خواجہ کا آئی جی سندھ کا عہدہ چھوڑنے سے انکار

اے ڈی خواجہ کو ہٹانے پر نیا تنازعہ کھڑا ہو گیا ، عبدالمجید دستی نے قائم مقام آئی جی سندھ کا چارج سنبھال لیا لیکن اے ڈی خواجہ نے عہدہ چھوڑنے سے انکار کر دیا ہے ۔ معاملے پر وفاق اور صوبائی حکومت میں بھی ٹھن گئی ۔ سندھ کے بھجوائے گئے تین ناموں پر مرکز نے اعتراض لگا دئیے ۔ ایک کرسی دو افسران ، کون ہو گا براجمان ، اے ڈی خواجہ کو ہٹانے پر سندھ میں نیا بحران پیدا ہوگیا ۔ اے ڈی خواجہ نے اعلان کر دیا کہ آئی جی کی تعیناتی وفاق کا استحقاق ہے عہدہ نہیں چھوڑوں گا ۔ دبنگ افسر نے دو ٹوک اعلان کر دیا ۔ عبدالمجید دستی کا بھی بیان آگیا ، ان کا کہنا ہے کہ صوبائی حکومت نے چارج دیا ہے ۔ نیا آئی جی کون ہوگا ؟ دونوں افسروں کے ساتھ وفاق اور سندھ حکومت بھی آمنے سامنے آگئے ، صوبائی حکومت نے اے ڈی خواجہ کی خدمات وفاق کے سپرد کر کے صبح تین ناموں کی سمری بھجوائی ، انتظار کی زحمت کئے بغیر ایڈیشنل آئی جی سردار عبدالمجید دستی کو اضافی چارج کا نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا جنہوں نے عہدہ سنبھال کر دفتری امور بھی انجام دینا شروع کر دئیے ۔ دوسری طرف وفاق نے موقف اپنایا کہ سندھ حکومت کے خط میں شامل عبدالمجید دستی ، غلام قادر تھیبو اور خادم حسین بھٹی کی شہرت اچھی نہیں ، اسٹیبلشمنٹ ڈویژن پیر یا منگل کو سمری وزیر اعظم کو بھیجے گا ، اس وقت آئی جی سندھ کون ہے؟ کس کا حکم مانیں ؟پولیس افسر مخمصے کا شکار ہیں ۔
This entry was posted in قومی, اہم خبریں. Bookmark the permalink.