تعلیمی اداروں کے قریب ٹریفک مسائل پر قابو پانے کیلئے حکمت عملی تیار

صوبائی حکومت نے لاہور کے معروف تعلیمی اداروں کے اردگرد سڑکوں پر تعلیمی اوقات کے دوران ٹریفک کے مسائل پر قابو پانے کیلئے منظم حکمت عملی تیار کر لی ۔ اس حوالے سے وزیر سکولز ایجوکیشن رانا مشہود احمد خاں کی زیر صدارت سکولز ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے کمیٹی روم میں اجلاس ہواجس میں ٹریفک کے مسائل سے نمٹنے کے لئے مختلف تجاویز پر غورکیا گیا ۔ چیف ٹریفک آفیسر رائے اعجاز نے کہا کہ 832 ماسٹر ٹرینرز کے ذریعے تعلیمی اداروں میں ٹریفک مسائل کے حل کے لئے آگاہی مہم چلائی جائے گی ۔ انہوں نے پبلک ٹرانسپورٹ کے استعمال کی تجویز پیش کی اور کہا کہ تعلیمی اداروں کے اوقات کارمیں ٹریفک کے مسائل کے حل کے لئے طلبہ کو سٹوڈنٹس کارڈ جاری کئے جائیں،انہوں نے تعلیمی اداروں میں سینئر اور جونیئر ٹریفک پریفیکٹس نامزد کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا ۔ چیف ایگزیکٹو لاہور ٹرانسپورٹ اتھارٹی مریم خاور نے جیل روڈ پر واقع لاہور یونیورسٹی فارویمن ، اپوا کالج ، کنیئرڈ کالج اور ہوم اکنامکس کالج کے اوقات کار میں ٹریفک مسائل کے حل کے لئے 70 نئی بسیں چلانے کا عندیہ دیا اور کہا کہ ان بسوں میں آرام دہ اور محفوظ سفرانتہائی مناسب کرایہ پر مہیا کیا جائے گا ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ان بسوں میں طالبات کی سکیورٹی کے پیش نظر کیمرے بھی نصب ہوں گے اور والدین کو ایس ایم ایس کے ذریعے اپ ٹو ڈیٹ رکھاجائے گا ۔ دریں اثناصوبائی وزیر رانا مشہود احمد خاں کی زیر صدارت منعقدہ اجلاس میں سانحہ تربت کے حوالے سے قائم کی گئی کمیٹی کی سفارشات کو حتمی شکل دی گئی ۔ یہ کمیٹی اپنی سفارشات مزید کارروائی اور عملدرآمد کیلئے وزیر اعلیٰ پنجاب کو پیش کرے گی ۔
This entry was posted in قومی, اہم خبریں. Bookmark the permalink.