سعودی صحافی کے قتل کے بارے میں بادبان رپورٹ جو3دن پہلے شائع ہوئی، اُس کی تصدیق آج ترک صدر کے خطاب میں ہو گئی۔۔۔ترک صدر نے کہا کہ خشوگی کے قتل میں گرفتار دو افراد قتل میں ملوث ہیں ۔۔۔ ہماری پولیس اور انٹیلیجنس ایجنسی باریک بینی سے جائزہ لے رہی ہے اور سعودی ٹیم نے استنبول جنگل کا بھی دورہ کیا۔ تفصیلات بادبان رپورٹ میں ملاحظہ فرمائیں۔

بادبان رپورٹ : جمال خشوگی کے قتل کے بارے میں بادبان کی رپورٹ 3 دن پہلے ہی شائع ہوئی جس کی تصدیق آج ترک صدر کے بیان میں بھی ملتی ہے۔ 

سعودی صحافی جمال خاشقجی کو کیوں ؟کیسے ؟کہاں اور کن لوگوں نے قتل کیا ؟سعودی عرب کا قتل میں کردار سمیت اہم نکات  اور انکشافات۔ جانیں بادبان سپیشل رپورٹ میں۔

 ترک صدر طیب اردوان کا کہنا ہے خشوگی کے قتل کا منصوبہ سعودی قونصل خانے میں بنا۔۔۔

واقعے سے پہلے کیمرے بند کئے گئے، اہلکار صحافی کا روپ دھار کر عمارت سے باہر نکلا، اٹھارہ افراد کے خلاف ترکی میں مقدمہ چلنا چاہئے۔

خشوگی قونصل خانے میں لڑائی کے دوران مارے گئے، سفارتی استثنیٰ کے باعث ہم عمارت کے اندر نہیں جاسکے، سعودی عرب سے 2 افراد خشوگی کے قتل میں ملوث تھیں۔ خشوگی کا ہم شکل بھی ہے جو خشوگی کے روپ میں باہر آیا، حقیقیت کا پتہ چلا کر رہیں گے، کوئی روک نہیں سکتا۔ ترک صدر