قوم کے بار بار ٹھکرائے لوگ استعفیٰ مانگ رہے ہیں: میاں نواز شریف

سیالکوٹ ایوان صنعت وتجارت میں تاجروں سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہا کہ قوم کے بار بار ٹھکرائے لوگ استعفیٰ مانگ رہے ہیں، سمجھ نہیں آتی یہ کرپشن کب اور کہاں ہوئی، جس کا آج احتساب ہو رہا ہے، تماشا لگانے والوں کا گریبان کون پکڑے گا؟، ہم پر ایک پائی کی بھی کرپشن کا داغ نہیں، قوم کے سامنے سرخرو ہونگے، منفی سیاست نہ ہوتی تو پاکستان ترقی کی بلندیوں پر ہوتا۔ میاں نواز شریف نے کہا سی پیک کو ناکام بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے، لاہور سیالکوٹ موٹروے منصوبے کو بر وقت مکمل کیا جائے، پاکستان کو لوڈشیڈنگ سے بہت جلد نجات ملے جائے گی، ملک میں موٹروے تیزی سے بن رہی ہیں، ملتان سے سکھر موٹروے بن رہی ہے۔انہوں نے کہا بلوچستان میں بے پناہ ترقی ہو رہی ہے، کراچی، حیدر آباد موٹروے تقریبا مکمل ہوچکی ہے، آئے دن بجلی کے نئے کارخانے کا افتاح ہو رہا ہے، ابتدائی 2 سال وسائل ڈھونڈنے میں لگ گئے، پہلی بار اپنے دور حکومت کے 4 سال پورے کیے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا 2013 میں 16 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ تھی، ملک کے دیوالیہ ہونے کی قیاس آرائیاں ہو رہی تھیں ، سابق ادوارمیں ہرروز کرپشن کی غضب کہانی آتی تھی۔ کس خورد برد یا ہمارے ذاتی کاروبار کا احتساب ہو رہا ہے؟، وہ حساب دیں جنہوں نے کرپشن کی، ہم سے کیوں حساب مانگا جارہا ہے۔انہوں نے کہا اب تیسرے دھرنے کی تیاری ہو رہی ہے، سی پیک میں تاخیرکے ذمہ دار بھی یہی لوگ ہیں، قوم جانتی ہے تماشہ کیسےلگا اور لگانے والے کون ہیں؟ ملک کے اندر لگنے والا مینا بازار پاکستان کو کس طرف لے جائےگا؟ منفی سیاست کرنے والوں کا گریبان کون پکڑے گا، جتنی مرضی الزام تراشی کر لو،عوام تمہیں آئندہ بھی ووٹ نہیں دیں گے۔
This entry was posted in قومی, اہم خبریں. Bookmark the permalink.