‘مصباح، یونس خان کے بعد پاکستان ٹیسٹ میں اوسط درجے کی ٹیم بن چکی’

ایک ریڈیو انٹرویو میں وسیم اکرم کا کہنا تھا کہ ماضی کے برعکس ڈومیسٹک کرکٹ میں اب منصوبہ بندی دکھائی نہیں دیتی، جس طرح ایک شاعر کو شعر کی آمد ہوتی ہے، ہمارے کرکٹ آرگنائزرز کو بھی اچانک ٹورنامنٹ کی آمد ہوتی ہے، یہ سلسلہ بند ہونا چاہئے۔

وسیم اکرم نے ٹیسٹ ٹیم کی کارکردگی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مصباح اور یونس خان کے بعد پاکستان اوسط درجے کی ٹیم بن چکی ہے۔

سابق کپتان کا کہنا تھا کہ ایشیز کا پاک بھارت سیریز سے کوئی موازنہ نہیں، ایشیز کو چار سے پانچ ملین لوگ دیکھتے ہیں لیکن پاک بھارت میچ دیکھنے کے لئے ایک ارب انسان بے تاب ہو جاتے ہیں۔

وسیم اکرم نے عمر اکمل کو میڈیا کی بجائے صرف بیٹنگ پر توجہ دینے کا مشورہ بھی دیا۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.