موجودہ حکومت نے تو عوام کے کپڑے بھی اُتار لئے ہیں ۔ توں توں میں میں کے علاوہ کوئی کام نہیں ۔ گلگت میں بلاول بھٹوں کا خطاب۔ تفصیلات جانئے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ہم نیا پاکستان کے نام پر پرانا پاکستان تباہ کرنے والوں کو روکیں گے، انہیں ”توں توں میں میں“ کے علاوہ تیسرا کوئی لفظ نہیں آتا، یہ معاشی بحران کا حل کیا نکالیں گے.

بلاول بھٹو زرداری کا گلگت بلتستان کے شاہی پولو گراؤنڈ میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ آپ نے نئے پاکستان کا خاکہ تو دیکھ لیا ہوگا، یہ کیسا نیا پاکستان ہے جہاں غریب کی کوئی آواز نہیں سنی جا رہی اور نہ ہی کسی کی جان ومال محفوظ ہے، تحریک انصاف کی وجہ سے عوام مہنگائی کی سونامی میں ڈوب رہے ہیں، کسان بے حال اور مزدور کو مزدوری نہیں مل رہی۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ نئے پاکستان میں ایک کروڑ نوکریاں دینے کا وعدہ کیا گیا تھا لیکن نوکریاں دینے والے لوگوں سے روزگار چھین رہے ہیں، پچاس لاکھ گھر بنانے والے غریبوں کے کچے مکان توڑ رہے ہیں۔

انہوں نے عوام سے سوال کیا کہ کیا گلگت میں صحت، تعلیم اور ترقی کا وعدہ پورا ہوا؟ آج کل تبدیلی کے وعدے کیے جا رہے ہیں، تبدیلی کا آغاز گلگت بلتستان کے بجٹ کو کاٹ کر کیا گیا۔ گلگت بلتستان کے باسیوں نے ڈوگرا راج کیخلاف جنگ لڑی لیکن ڈوگرا راج سے آزادی حاصل کرنے والوں کو بنیادی حقوق سے محروم رکھا گیا۔ سی پیک میں گلگت بلتستان کو نظر انداز کیا گیا، گلگت بلتستان کے حقوق پر کسی کو ڈاکہ نہیں مارنے دیں گے، سی پیک منصوبے میں گلگت بلتستان کے حقوق کا تحفظ کریں گے