نہ اسمان توٹا کالی وردی کے بعد نیلی وردی بھی قاتلوں اور آغوا کاروں کی سھولت کار ایک اور فرشتہ قتل

2اسلام اباد چک شہزاد میں یہ معصوم پری کو پندرہ می۶ کو اغوا کیا گیا۔۔ اس کے والدین اور رشتہ دار تھانے کے چکر لگاتے رھے ۔۔ لیکن پولیس والوں FIR تک درج نہی کرتے۔۔ اخر کار بااثر لوگ اپنے ساتھ تھانے لے کر FIR درج کیا گیا۔۔ اج اس معصوم پری کی لاش اک ویران جگہ میں پاہی گی۶۔۔ زیادتی کے بعد اس معصوم پری کو قتل کیا گیا۔۔ کیا یہ بھی زینب کی طرح اک محصوم پری نہی تھی ۔۔ چک شہزاد بنی گالہ سےپندرہ منٹ کے فاصلے پر واقع ھیں۔۔ وہ سیاست دان کدھر گہے ۔۔ مرچکے ھیں ۔۔ جو زینب کے قتل پر تقرریں کرتے تھے۔۔ اور چیف جسٹس صاحب سوموٹو لیتے رھے۔۔ کیا یہ ظلم اور بے انصافی اخر کب تک اس ملک میں چلی گی۔۔ اور روز بروز یہ درندگی اور رقص ابلیست میں اضافہ ھوگا۔۔ کیا ھم ہر وہ کام کریں گا جس سے بدبودار سیاست کی تدفن ھوگی۔۔ کیا پاکستانيوں کی ضمیر مرچکے ھیں۔۔ اس پہ زینب کی طرح احتجاج ھونا چاھے ھیں۔۔ تاکہ مجرموں کو گرفتار کرکے تختہ دار پہ لتکایا جاوے۔۔ اس معصوم پری کو انصاف دلاںے کیلے تمام محب وطن اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا جاوے اور غفلت کے مرتکب پولیسوں کو بھی نشاں عبرت بنایا جاوے ۔ یہ ریاست اور محب وطن پاکستانیوں کی ذمداری ھیں