وزارتِ مذہبی امور کے وزیر 100 ارب ڈکارنے کے لئے میدان میں کُود پڑے۔ وزیر مذہبی امور کوئی ریٹ بتانے کے بجائے 2 روز میں ایک بار کہا کہ سعودی عرب کی وجہ سے ریٹ بڑھے ہیں۔ سیکرٹری اور وزیر مذہبی امور میں مال پر پھڈا اور تمام تفصیلات جانئے بادبان رپورٹ میں۔

وزیر مذہبی امور کہہ رہے ہیں کہ حج کو نجی شعبے کے حوالے کرنے کے لئے سعودی عرب کا دُبائو ہے۔ کیا وزیر مذہبی امور یہ بتائیں گے کہ حج 2 لاکھ مہنگا کرنا اور فی حاجی ڈیڈھ لاکھ کی کرپشن کرنے میں کس کا دُبائو ہے۔ 
یہ حج 2004 میں سعودی عرب کے کہنے پر چالیس فیصد کوٹہ پرائیویٹ آپریٹرز کو دیا گیا تھا، اور یہ دُبائو 2004 سے ہے اور 2019 آ گیا ہے۔ 
وزیر مذہبی امور کرپشن چُھپانے کے لئے جھوٹ پر جھوٹ مت بولیں اور یہ بتائیں کہ حاجیوں کی رہائشیں کہاں لیں اور اُس پر کرپشن کتنی کرنی ہے۔ فی حاجی کھانے کا ریٹ کیا ہے اور اس میں کتنا کمیشن طے ہے؟ حاجیوں کے لئے بسوں کا ریٹ کیا ہے اور اس میں کمیشن کیا طے ہے؟ مدینہ شریف میں رہائشوں کا ریٹ کیا ہے اور اس میں کتنا کمیشن ہے اور ان کا فاصلہ کتنا ہے؟ 
یہ بتایا جائے کہ گزشتہ سال میں حج دو لاکھ اسی ہزار میں کروایا جاتا تھا اور پچاس ہزار فی حاجی کرپشن کی جاتی تھی۔ وزیر مذہبی امور یہ بتائیں چار لاکھ چالیس ہزار حج کا ریٹ کیوں رکھا گیا؟ ڈالر اور ریال مہنگا ہوا جس سے تیس ہزار حج مہنگا ہونا چاہیئے تھا۔ پچاس ہزار کی کرپشن جو گزشتہ حکومت فی حاجی کرتی تھی اُس کو کم کر دیا جائے تو دو لاکھ چالیس ہزار کا حج ہونا چاہیئے تھا۔ جس سے عمران خان کی نیک نامی میں اضافہ ہوتا۔ 
وزیر موصوف، حج کا سیکرٹری اور حج کا جے ایس کہاں سے آئے ہیں اور کیا کر رہے ہیں ۔ 
وزیر اعظم آئندہ ہفتے میں سعودیوں اور پرائیویٹ ٹور آپریٹرز سے اہم ملاقاتیں کر رہے ہیں جس کے بعد ہم قائرین کو بتائیں گے کہ جے ایس حج، سیکرٹری حج اور وزیر حج نے کتنے ارب روپے لوگوں سے پکڑے ہیں۔
وزارتِ مذہبی امور، غیر مذہبی امور کے روپ میں!!!۔
حج جیسے فریضے میں سبسڈی نہیں کرپشن ختم کی جائے!!!۔
تبدیلی سرکار کی لوٹ مار۔ سبسڈی کی جگہ ایک لاکھ پچاس ہزار فی حاجی ، کرپشن ہو گی۔
وزیر مذہبی امور اور سیکرٹری حج کرپشن میں ملوث ہیں۔
منٰی میں کنکریوں تک کرپشن ہو گی۔
وزیر مذہبی امور، خود بھانجا کرپشن میں ملوث۔ ہاٹ شپ کوٹہ، کرپشن کا دوسرا نام۔
قادیانی وزارتِ حج میں ہوں گے تو یہ کام ضرور ہو گا۔
حکومت ڈیڈھ لاکھ روپے کرپشن فی حاجی کرنے کے بعد حکومت اس میں تیس ہزارکا ریلیف دے کر عوام کو یہ باور کروائے گی کہ انہوں نے عوام کو ریلیف دیا۔ تین لاکھ میں حج کروانے کے لئے اہم پارٹیاں موجود ہیں جو موجودہ حکومت سے بہتر حج کروا سکتی ہیں۔

بادبان رپورٹ وزارتِ مذہبی امور، غیر مذہبی امور کے روپ میں۔ حج جیسے فریضے میں سب سڈی نہیں کرپشن ختم کی جائے۔ تبدیلی سرکار کی لوٹ مار۔ سبسڈی کی جگہ ایک لاکھ پچاس ہزار فی حاجی ، کرپشن ہو گی۔ وزیر مذہبی امور اور سیکرٹری حج کرپشن میں ملوث ہیں۔ منٰی میں کنکریوں تک کرپشن ہو گی۔ وزیر مذہبی امور، خود بھانجا کرپشن میں ملوث۔ ہاٹ شپ کوٹہ، کرپشن کا دوسرا نام۔ قادیانی وزارتِ حج میں ہوں گے تو یہ کام ضرور ہو گا۔ تفصیلات جانئے بادبان رپورٹ میں۔

وزیر مذہبی امور کہہ رہے ہیں کہ حج کو نجی شعبے کے حوالے کرنے کے لئے سعودی عرب کا دُبائو ہے۔ کیا وزیر مذہبی امور یہ بتائیں گے کہ حج 2 لاکھ مہنگا کرنا اور فی حاجی ڈیڈھ لاکھ کی کرپشن کرنے میں کس کا دُبائو ہے۔ یہ حج 2004 میں سعودی عرب کے کہنے پر چالیس فیصد کوٹہ پرائیویٹ آپریٹرز کو دیا گیا تھا، اور یہ دُبائو 2004 سے ہے اور 2019 آ گیا ہے۔ وزیر مذہبی امور کرپشن چُھپانے کے لئے جھوٹ پر جھوٹ مت بولیں اور یہ بتائیں کہ حاجیوں کی رہائشیں کہاں لیں اور اُس پر کرپشن کتنی کرنی ہے۔ فی حاجی کھانے کا ریٹ کیا ہے اور اس میں کتنا کمیشن طے ہے؟ حاجیوں کے لئے بسوں کا ریٹ کیا ہے اور اس میں کمیشن کیا طے ہے؟ مدینہ شریف میں رہائشوں کا ریٹ کیا ہے اور اس میں کتنا کمیشن ہے اور ان کا فاصلہ کتنا ہے۔ تمام تفصیلات جانئے بادبان رپورٹ میں۔