پاکستان مطالعاتی ادارہ برائے سلامتی و تنازعات، پکس کی سالانہ سیکیورٹی رپورٹ جاری۔ تمام تفصیلات جانئے بادبان رپورٹ میں۔

بادبان رپورٹ
سال 2018ء ملکی سلامتی و استحکام کیلئے کلیدی کامیابیوں کا سال رہا

جنگجو حملوں میں 45 فیصد، جانی نقصان میں 37 فیصد کمی ہوئی، رپورٹ

پاکستان میں 229 جنگجو حملے، 577 افراد ہلاک، 959 زخمی ہوئے، رپورٹ

2018ء میں 18 خودکش حملے ہوئے جو 2017ء کے مقابلے میں کہیں کم ہیں، رپورٹ

سلامتی کی صورتحال غیر معمولی بہتر، ماہانہ حملوں کی تعداد کم ہو کر 19 رہ گئی، رپورٹ

2014 میں ماہانہ 134 حملے ہوتے تھے، پکس سالانہ سیکیورٹی رپورٹ

جنگجو حملوں میں بھی مسلسل کمی کا مسلسل رجحان جاری ہے، رپورٹ

سال 2018 ء میں سب سے زیادہ جنگجو حملے، جانی نقصان بلوچستان میں ہوا، سالانہ رپورٹ

بلوچستان میں ماہ جولائی میں سب سے زیادہ ہلاکتیں ہوئیں، سیکیورٹی رپورٹ

جنگجو حملوں کا 43 فیصد، مجموعی ہلاکتوں کا 61 فیصد اور زخمیوں کی تعداد کا 59 فیصد بلوچستان میں ریکارڈ ہوا، رپورٹ

بلوچستان میں 99، سندھ میں 14، پنجاب میں 6 اور گلگت بلتستان میں 4 جنگجو حملے ہوئے، رپورٹ

خیبرپختون خوا بشمول قبائلی اضلاع میں 105 جنگجو حملے ہوئے، پکس سیکیورٹی رپورٹ

سیکیورٹی فورسز نے 176 کارروائیاں، 97 مشتبہ جگنجوئوں کو ہلاک، 360 گرفتار کو کیا، رپورٹ

سکیورٹی فورسز کی سب سے زیادہ توجہ سندھ، بلوچستان میں مرکوز رہی، پکس رپورٹ