ہمسائے ممالک کے ساتھ کیسے تعلقات رکیں گے؟ نئی حکومت کا نیا انداز

نئے وزیراعظم عمران خان حلف اُٹھانے کے بعد ایران ، چین اور افغانستانکا دورہ کریں گے۔ 

ایرانی صدر حسن روہانی نے عمران خان کو ٹیلیفونک رابطے کے زریعے مبارک باد بھی دی ہے اور ایران میں دورے کی دعوت بھی دی ہے۔  عمران خان نے دورے کی دعوت قبول کر لی ہے ۔ یاد رہے کہ یہ پہلی بار تاریخ میں ہو گا کہ پاکستان کا وزیر اعظم حلف اُٹھانے کے بعد ایران دورے پرجا رہا ہے۔ 

عمران خان پہلے بھی یہ اپنے بیانا ت میں بار آور کر چکے ہین کہ وہ اپنے ہمسائے ممالک کے ساتھ ہمیشہ اچھے تعلقات کا خواہا ہوں اور کسی پروکسی وار کا حصہ نہیں بنوں گا اور کسی اسلامی ملک کے خلاف جارحیت کا اور پروپیگینڈے کا حصہ نہیں بنوں گا۔ 

ایران سے اچھے تعلقات سے پاکستان اور ایران دونوں کی بہت بڑی کامیابی ہو گی۔ کیونکہ دونوں ممالک کی سرحدیں بھی ملتی ہیں اور دونوں ممالک اگر مل کر کام کریں گے تو یہ بہت خوش آئند ہوگا۔ اس کے ساتھ ساتھ ایران پاکستون کو 10 روپے فی لیٹر پٹرول دینے کے لئے بھی تیار ہے۔ دونوں ممالک کی باہمی ہم آہنگی ترقی کے لئے بہت سود مند ثابت ہو سکتی ہیں ۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.