ایف سی کا تربت اور خضدار میں آپریشن، 12 دہشت گرد ہلاک، ایک اہلکار شہید

 

کوئٹہ: فرنٹیئر کور نے تربت کے علاقے گوماڑی اور خضدار دشت گوران میں سرچ آپریشن کیا مقابلے 12 افراد ہلاک ہوگئے، بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود برآمد کرلیا گیا۔فائرنگ کے تبادلے میں ایک ایف سی اہلکار شہید اور 4 زخمی ہوئے، 6 گاڑیاں بھی تباہ کردی گئیں، آپریشن میں ہیلی کاپٹرز اور اے پی سیز سے بھی مدد لی گئی، کوئٹہ اور اندرون صوبہ فائرنگ کے دیگر واقعات پولیس اہلکاروں سمیت10 افراد جاں بحق ہوگئے مختلف حادثات نے 7 افراد کی جان لے لی۔ فرنٹیئرکورکے ترجمان کے مطابق فرنٹیئرکور بلوچستان نے ضلع تربت کے علاقے گوماڑی میں خفیہ اداروں کی اطلاع پر دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کیا گیا۔سرچ آپریشن میں فرنٹیئر کور بلوچستان کے 600 اہلکاروں نے حصہ لیاجبکہ آپریشن کی نوعیت کو مدنظررکھتے ہوئے ہیلی کاپٹرزاوراے پی سیزکی مدد لی گئی۔سرچ آپریشن کے دوران دہشت گردوں کی شدید فائرنگ کے نتیجے میں10سے12 افرادہلاک جبکہ ایک ایف سی اہلکار شہید اور4زخمی ہوئے۔ سرچ آپریشن کے دوران شرپسندوں کی کمین گاہوں سے بھاری مقدار میں مائنز، آئی ای ڈیز اورگولہ بارود برآمدکرلیا گیا۔
واضح رہے کہ حساس اداروں کی جانب سے اطلاع تھی کہ کالعدم تنظیموں کے دہشت گردوں نے تربت کے علاقے گوماڑی میں پناہ لے رکھی ہے، سرچ آپریشن میں ہلاک ہونے والے دہشتگردعلاقے میں اغوا برائے تاوان، ٹارگٹ کلنگ،ڈکیتی اورایم8 شاہراہ پر سیکیورٹی فورسزپر حملوں میں ملوث تھے،کارروائی کے دوران دہشت گردوں کی6گاڑیاں بھی تباہ کی گئیں۔ ترجمان کے جاری کردہ ایک اور بیان کے مطابق فرنٹیئرکور بلوچستان نے ضلع خضدارکے علاقے دشت گوراں میں خفیہ اداروں کی اطلاع پر انتہائی مطلوب دہشتگرد کے خلاف سرچ آپریشن کیا۔ہیلی کاپٹروں کے ذریعے فضائی نگرانی بھی کی گئی، آپریشن کے دوران جرائم پیشہ افرادکے ٹھکانے سے بھاری مقدارمیں اسلحہ اور گولہ بارود بھی برآمد کیا گیا جس میں آئی ای ڈیز مائنز اورگولہ بارود شامل ہیں۔ آئی جی ایف سی میجر جنرل محمد اعجاز شاہد نے فرنٹیئرکور بلوچستان کے جوانوں کی دہشتگردوں کے خلاف سرچ آپریشن کو سراہتے ہوئے کہا کہ بیرونی ایجنڈے پر عمل پیرادہشت گردوں اور جرائم پیشہ عناصر کی بیخ کنی تک صوبائی حکومت کے احکام کے تحت ٹارگٹڈ سرچ آپریشن جاری رہے گا۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*