نواز شریف کا استعفیٰ لیئے بغیر نہیں جائیں گے، اسمبلی میں بیٹھے لوگ گولیاں چلانے کا مطالبہ کرتے ہیں، کل دھرنا ڈی چوک منتقل کر یں گے: عمران خان

 

اسلام آباد:پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ کل دھرنا واپس ڈی چوک میں منتقل کر رہے ہیں، ہم یہاں فوج نہیں عوام کے اشارے پر آئے ہیں اور کوئی غلطی میں نہ رہے ہم نواز شریف کا استعفیٰ لیئے بغیر یہاں سے واپس نہیں جائیںگے، یہ کیسی جمہوریت ہے یہاں اسمبلی میں لوگوں پر گولیاں چلانے کے مطالبے ہوتے ہیں؟چینی صدر کا دودرہ ہماری وجہ سے ملتوی نہیں ہوابلکہ اس کی وجہ کنٹینر زہیں۔آزادی مارچ کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ نواز شریف سمجھ رہے تھے کہ کپتان میدان چھوڑ کر بھاگ جائے گا، وہ بھول گئے تھے کہ کپتان تو کبھی نہیں بھاگتا، کل سے دھرنا واپس ڈی چوک میں منتقل کر رہے ہیں، آج حکومت یہ ظاہر کرنے کی کوشش کر رہی کہ سارے مسئلے ہماری وجہ سے ہی ہیں لیکن میاں صاحب کو بتانا چاہتا ہوں کہ یہ تو ابھی ٹریلر ہے، میچ ابھی جاری ہے. انہوں نے کہا کہ آج قومی اسمبلی میں محمود خان اچکزئی اور مولانافضل الرحمان سب سے زیادہ شور مچاتے ہیں کیونکہ اسمبلی میں جو جتنا بڑا بڑا چور ہے وہ اتنا زیادہ شور مچاتا ہے، جس کو جتنے زیادہ دھاندلی زدہ ووٹ ملے آج وہ اتنی زیادہ کوشش کرتا ہے کہ اس پر پردہ پڑا رہے۔ آج اسمبلیوں میں بیٹھے لوگ کس منہ سے جمہوریت کی بات کرتے ہیں جب کہ ان کے سامنے اس حکومت نے احتجاج کرنے والوں پر گولیاں چلائیں، اور یہ لوگ اسمبلی میں بیٹھے کہہ رہے ہیں کہ مزید تشدد کر و اور گولیاں مار کر ان کو یہاں سے بگاو۔ کپتان نے کہا کہ جب ایک سال پہلے جب دھاندلی ہوئی اور نواز شریف نے سابق چیف جسٹس کے ساتھ مل کر میچ فکس کیاتو اس کے بعد ہم نے ہر طرح سے احتجاج کیا، وائٹ پیپر بھی جاری کیا ، پارلیمنٹ اور عدالت بھی گئےمگر کسی نے آواز نہیں سنی اور اب جب ہم دھرنا دے رہے ہیں تو کہا جاتا ہے چینی وزیر اعظم نے ہماری وجہ سے دورہ منسوخ کر دیا، یہ دورہ ہماری وجہ سے نہیں بلکہ حکومت کے لگائے ہوئے کنٹینروں کی وجہ سے منسوخ ہوااور چینی وزیر اعظم کی پاکستان میں ممکنہ سرمایہ کاری سے متعلق بھی اس حکومت نے جھوٹ بولا، چینی وزیر اعظم سرمایہ کاری کرنے نہیں بلکہ 7فیصد شرح سود پر 45بلین کے قرضے دینے آ رہے تھے۔ چیئرمین تحریک انصاف نے لاہور کے ایک صوبائی حلقے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ صرف چھے پولنگ اسٹیشنز میں 4762ووٹ چیک کئے گئے تو ان میں سے جعلی ووٹ 3224نکلے۔ اسی حلقے میں میں نے موجودہ اسپیکرقومی اسمبلی ایاز صادق کے خلاف الیکشن لڑا تھا ، اور ایاز صادق نے اسٹے آرڈر لے رکھا ہے کہ ووٹوں کی تصدیق نہ ہو جائے، تو اس صوبائی حلقے میں ووٹوں کی تصدیق کے دوران پتہ چلا کہ صوبائی اسمبلی کے حلقے میں میرے ووٹ ڈال کر مجھے قومی اسمبلی کے ملے ہوئے ووٹ ضائع کر دیئے گئے۔ اس کے علاوہ 10پولنگ اسٹیشنوں پر ووٹ ڈالنے کے لئے بیلٹ پیپر ہی دستیاب نہیں تھے۔ PS-45میں ایک پولنگ اسٹیشن میں بیلٹ باکس میں ’بھوسہ ‘ ڈال دیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ جنگ گروپ اور جیو نیوز پاکستان مسلم لیگ ن کا ترجمان بن چکا ہے، جن کا نعرہ ہے’نواز شرف پیسے بڑھاو ہم تمہارے ساتھ ہی ہیں‘ اور دوسر ی جانب پاک آرمی پر الزام لگایا جاتا ہے کہ انہوں نے ہمیں دھرنوں پر بھیجا ہے، حالانکہ فوج کا ہمارے ساتھ کوئی تعلق ہی نہیں ہے۔ اگر فوج ہمارے پیچھے ہوتی تو ہم کب کے اپنے گھروں کو جا چکے ہوتے، ہمارے مذاکرات جاری ہیں مگر ہم استعفیٰ لئے بغیر نہیں جانے والے۔اس لئے سارے ملک سے لوگ یہاں پہنچیں کیونکہ جو جنگ ہم لڑ رہے ہیں یہ پاکستان کی جنگ ہے، مسلم لیگ کی لاہور میں دکھائی گئی کارکردگی ’سوئمنگ پولز‘ میں تبدیل ہو چکی ہے۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.