غداری کیس: پراسیکیوشن کے آخری گواہ اور تحقیقاتی کمیٹی کے سربراہ نے بیان ریکارڈ کرادیا

 

اسلام آباد: غداری کیس میں ایف آئی اے کی تحقیقاتی کمیٹی کے سربراہ اور پراسیکیوشن کے آخری گواہ خالد قریشی نے بھی خصوصی عدالت میں اپنا بیان ریکارڈ کرادیا۔ جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں خصوصی عدالت کے تین رکنی بینچ نے غداری کیس کی سماعت کی ۔ دوران سماعت ایڈیشنل ڈی جی ایف آئی اے خالد قریشی نے اپنا ریکارڈ کرادیاجس کے مطابق ڈی جی ایف آئی اے سعودمرزانے 25جون 2013ءکواُنہیں تحقیقات کی ذمہ داری سونپی تھی اور کمیٹی میں مقصود الحسن، محمد اعظم اورمحمد اصغر شامل تھے جس کے دوروز بعد ایوان صدر، وزیر عظم سیکرٹریٹ کو تعاون کے خطوط لکھے گئے ،یہی خطوط کابینہ، وزارت داخلہ،وزارت قانون،وزارت دفاع، اٹارنی جنرل اور پرنٹنگ کارپوریشن کو بھی بھیجے گئے ۔تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ کاکہناتھاکہ پرویز مشرف نے ایمرجنسی بطر آرمی چیف نافذ کی اور پی سی او ججوں کے حلف نامہ پر بطور صدر دستخط کئے۔
اُنہوں نے بتایاکہ ہر تحقیقاتی افسر کو الگ ذمہ داریاں سونپی گئیں اورطے کیا گیا تھا تحقیقات شفاف اور میرٹ پر ہوں گی،پہلی میٹنگ ڈی جی ایف آئی اے کے دفتر میں ہوئی اور فیصلہ کیاگیاکہ تحقیقات سے کسی صورت بھی ادارے کی ساکھ کو نقصان نہیں پہنچے گااورجو بیانات ریکارڈ کئے گئے ان میں حقائق سامنے آئے۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.