کراچی میں فائرنگ اورپر تشدد واقعات میں فوجی جوان سمیت 5 افراد جاں بحق

 

کراچی: شہر کے مختلف علاقوں میں فائرنگ اورپر تشدد واقعات میں فوجی جوان، اتائی ڈاکٹر اور متحدہ قومی موومنٹ کے کارکن سمیت 5 افراد ہلاک ہوگئے۔ اورنگی ٹاؤن سیکٹر ساڑھے11غازی آباد میں موٹرسائیکل سوارملزمان کی فائرنگ سے40 سالہ اکرم عرف شاہ جی مسیح ہلاک ہوگیا،مقتول غازی آباد کرسچن محلے میں واقع ماربل کے کھلونے بنانیوالے کارخانے کا مالک تھا اورکارخانے میں کام کررہاتھا کہ 2 موٹر سائیکلوں پر سوار4مسلح ملزمان آئے جنھوں نے نشاندہی پر اکرم کو 5 گولیاں ماریں اورفرارہوگئے، مقتول متحدہ قومی موومنٹ کے یونٹ118کا کارکن اور اقلیتی امورکاممبر اور غازی آباد کا رہائشی تھا۔اورنگی ٹاؤن سیکٹر ساڑھے 11 رحمت چوک پرواقع کنفشنری اورسبزی کی دکان پرموٹر سائیکل سوارملزمان کی فائرنگ سے68 سالہ سید علی حسن ہلاک ہو گیا، مقتول پاپوش نگر کا رہائشی اور 5 بچوں کا باپ تھا، مقتول کا بڑا بیٹا ابن حسین نیشنل بینک آف پاکستان میں کارپوریٹ کمیونیکیشن کا سربراہ ہے۔لیاری سلاٹر ہاؤس کے قریب کچرا کنڈی سے25سالہ شخص کی تشددزدہ لاش ملی، مقتول کی شناخت طارق کے نام سے کرلی گئی، مقتول چاکیواڑہ کے علاقے گلستان کالونی کوئلہ گودام کارہائشی اور پاک فوج میں لانس نائیک تھا اورسندھ رجمنٹ کا جوان تھا، مقتول کاایک بھائی لیاری گینگ وارعذیر بلوچ گروپ کے کمانڈر فیصل پٹھان کا کارندہ ہے۔کورنگی ڈیڑھ نمبرمدینہ مسجد کے قریب موٹر سائیکل پر سوار ملزمان کی فائرنگ سے 40 سالہ عبدالعزیز جاں بحق ہوگیا تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ مقتول عبدالعزیز اتائی ڈاکٹر تھا، کیماڑی نمبرایک کالا پانی کے پاس سے 30 سالہ خاتون کی تشددزدہ سمندرمیں ڈوبی ہوئی لاش ملی،مقتولہ پینٹ شرٹ پہنے ہوئے تھی۔نیپئرکے علاقے عباسی ہوٹل نیپئرروڈ کے قریب نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے پولیس اہلکار 38 سالہ ممتاز اور راہگیر 40 سالہ محمد وزیر زخمی ہوگئے۔اورنگی ٹاؤن جرمن اسکول کے قریب نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے34 سالہ سجاد زخمی ہو گیا۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.