الیکشن کمیشن کا عام انتخابات سے متعلق قوانین میں بڑے پیمانے پر ترامیم کا فیصلہ

 

الیکشن کمیشن نے عام انتخابات سے متعلق قوانین میں بڑے پیمانے پر ترمیم کر نے کا فیصلہ کر لیا ہے ،قرار داد کے متن کے مطابق صدر الیکشن کی تاریخ کا فیصلہ از خود نہیں کر سکیں گے ، ریٹرننگ آفیسر الیکشن کمیشن کے ماتحت ہو ں گے ۔ تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن کی جانب سے تیار کی گئیں ترامیم کے مسودے کے مطابق عام انتخابات کی تاریخ کا اعلان صدر از خود نہیں کر سکیں گے بلکہ انتخابات کی تاریخ کا اعلان الیکشن کمیشن کی مشاورت سے کیے جانے کی تجویز دی گئی ہے ،مقررہ تاریخ تک اثاثے ظاہر نہ کرنے والے ارکان کی رکنیت 60 روز تک معطل کرنے کی تجویز بھی دی گئی ہے ۔مسودے میں قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے لیے انتخابی اخراجات میں اضافے کی تجویز بھی دی گئی ہے اور قومی اسمبلی کے امیدوار کے لےے انتخابی اخراجات کی حد ساٹھ لاکھ روپے اور صوبائی اسمبلی کے امیدواروں کے لیے چالیس لاکھ روپے کر نے کی تجویز دی گئی ہے ،قرار داد میں امیدواروں کے اثاثوں کی جانچ پڑتال کرنے کی بھی تجویز دی گئی ہے ۔ مسودے کے متن میں کہا گیا ہے کہ کسی بھی پولنگ سٹیشن خواتین کو ووٹ ڈالنے سے روکنے پر وہاں انتخابات کالعدم قرار دے دیئے جائیں گے،پولنگ سے 90 روز قبل ووٹ کی منتقلی پر پابندی ہو گی اور انتخابات سے ایک ماہ قبل پولنگ سکیم میں تبدیلی نہیں ہو سکے گی، مسودے میں امیدواروں کی اسکروٹنی کی مدت 7 روز سے بڑھا کر 15 روز کرنےکی تجویز بھی دی گئی ہے ۔ الیکشن کمیشن حکام کے مطابق انتخابی اصلاحات کمیٹی کو مسودہ بھجوا دیا گیا

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.