حکومت اور تحریک انصاف کا جوڈیشل کمیشن کے قیام پر اتفاق

 

حکومت اور پاکستان تحریک انصاف نے صدارتی آرڈیننس کے ذریعے جوڈیشل کمیشن کے قیام پر اتفاق کر لیا ہے۔ تحریک انصاف نے حکومت کو جوڈیشل کمشن کے قیام کے طریقہ کار کے حوالے سے ترمیم شدہ مسودہ بھی ارسال کر دیا۔
حکومت اور تحریک انصاف کے مابین انتخابی دھاندلی کی تحقیقات جوڈیشل کمشن کے ذریعے کروانے پر اتقاق ہو گیا ہے۔ دونوں فریقین جوڈیشل کمیشن کا قیام صدارتی آرڈیننس کے ذریعے کروانے پر بھی متفق ہو گئے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی دھاندلی کی تحقیقات 45 روز میں کئے جانے پر بھی آمادہ ہو گئی ہے جبکہ پہلے تحریک انصاف نے دھاندلی کی تحقیقات 30 دن کے اندر کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ تحریک انصاف نے جوڈیشل کمشن کے قیام کے طریقہ کار کے حوالے سے ترمیم شدہ مسودہ بھی حکومت کو ارسال کر دیا ہے جس میں (ن) لیگ کی جانب سے دی گئی سفارشات کا جواب دیا گیا ہے۔ مسودے میں کہا گیا ہے کہ تحریک انصاف دھاندلی کی تحقیقات سے متعلق حلقوں کی فہرست جوڈیشل کمیشن کو دے گی تاہم تحقیقات کیلئے حلقوں کا انتخاب جوڈیشل کمیشن کرے گا۔ تحریک انصاف کی جانب سے جو تجاویز دی گئی ہیں ان میں تحقیقات میں نادرا کی انگھوٹوں کی تصدیق سے متعلق رپورٹ شامل کرنے، انتخابات میں میٹرئیل کی کمی، پولنگ ریکارڈ کے غائب ہونے،عوامی نمائندگی ایکٹ 1976 اور 1977 کی خلاف وزری کی تحقیقات کرانا بھی شامل ہے۔ یہ تجویز بھی دی گئی ہے کہ کسی بھی ذرائع سے جوڈیشل کمیشن کو ملنی والی معلومات کو بھی تحقیقات کا حصہ بنایا جا سکتا ہے۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.