بدھ بھکشو کا حنوط شدہ جسم 200 سال سے مراقبے کی حالت میں

 

آلتی پالتی مارے بیٹھے بدھ بھکشو کا حنوط شدہ جسم گزشتہ ہفتے منگولیا کے ایک دور دراز کے علاقے سے ملا تھا۔ ایک شخص حنوط شدہ جسم کو فروخت کرنے کی کوشش کر رہا تھا کہ پکڑا گیا۔ بدھ بھکشوئوں نے انکشاف کیا ہے یہ شخص مردہ نہیں بلکہ مراقبے کی حالت میں ہے جسے بدھ مت میں ”تکدم” کہا جاتا ہے۔ بدھ کے مجسمے کو منگولیا کے نیشنل سنٹر میں منتقل کر دیا گیا ہے تاہم ابھی تک اس کی شناخت نہیں ہو سکی ہے کہ یہ کس شخصیت کا حنوط شدہ جسم ہے۔ بدھ مت کے پیروکاروں کا کہنا ہے یہ ایٹی گیلیو نامی بدھ پیشوا ہے جو 1927ء کو اس برفانی علاقے میں مراقبے میں بیٹھے تھے۔ بدھ مت کے ماننے والوں کا دعویٰ ہے کہ بدھ پیشوا مردہ نہیں بلکہ گزشتہ 200 سال سے مراقبے کی حالت میں ہیں۔ فارنزک ٹیسٹ میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ حنوط شدہ جسم بدھ مذہب کے کسی مذہبی پیشوا کا ہو سکتا ہے جس کا تعلق تبت سے بتایا جاتا ہے۔ منگولین انسٹیوٹ آف بدھشٹ آرٹ کے پروفیسر کا میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ حنوط شدہ جسم کا مشاہدہ کرنے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ بدھ بکشو مردہ حالت میں نہیں بلکہ طویل مراقبے میں ہیں۔ –

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.