*وائٹ ہاؤس کو پینٹ کرنے کا ٹھیکہ..!* ﺍﻣﺮﯾﮑﯽ ﺻﺪﺭ ﮈﻭﻧﻠﮉ ﭨﺮﻣﭗ ﻧﮯ ﻭﺍﺋﭧ ﮬﺎﻭﺱ ﮐﺎ ﺭﻧﮓ ﻭ ﺭﻭﻏﻦ ﮐﺮﻭﺍﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﻣﻤﺎﻟﮏ ﮐﮯ ﭨﮭﯿﮑﯿﺪﺍﺭﻭﮞ ﺳﮯ ﺗﺨﻤﯿﻨﮧ ﻃﻠﺐ ﮐﯿﺎ۔ ﭼﯿﻨﯽ ﭨﮭﯿﮑﯿﺪﺍﺭ ﻧﮯ ﺗﯿﻦ ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ، ﯾﻮﺭﭘﯽ ﭨﮭﯿﮑﯿﺪﺍﺭ ﻧﮯ ﺳﺎﺕ ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ ﺍﻭﺭ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻧﯽ ﭨﮭﯿﮑﯿﺪﺍﺭ ﻧﮯ ﺩﺱ ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ ﮐﺎ ﺗﺨﻤﯿﻨﮧ ﻟﮕﺎﯾﺎ۔ ﭨﺮﻣﭗ ﻧﮯ ﭼﯿﻨﯽ ﭨﮭﯿﮑﯿﺪﺍﺭ ﺳﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ﮐﮧ ﺁﭖ ﻧﮯ ﺗﯿﻦ ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ ﮐﺎ ﺗﺨﻤﯿﻨﮧ ﮐﯿﺴﮯ ﻟﮕﺎﯾﺎ؟ ﭨﮭﯿﮑﯿﺪﺍﺭ ﻧﮯ ﺟﻮﺍﺏ ﺩﯾﺎ ﮐﮧ ﺍﯾﮏ ﻣﻠﯿﻦ ﮐﺎ ﭘﯿﻨﭧ، ﺍﯾﮏ ﻣﻠﯿﻦ ﻟﯿﺒﺮ ﮐﯽ ﻣﺰﺩﻭﺭﯼ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﯾﮏ ﻣﻠﯿﻦ ﭘﺮﺍﻓﭧ ﮐﺎ۔ ﭨﺮﻣﭗ ﻧﮯ ﯾﻮﺭﭘﯽ ﭨﮭﯿﮑﯿﺪﺍﺭ ﺳﮯ ﺳﺎﺕ ﻣﻠﯿﻦ ﮐﺎ ﭘﻮﭼﮭﺎ۔ ﯾﻮﺭﭘﯽ ﻧﮯ ﺟﻮﺍﺏ ﺩﯾﺎ ﺗﯿﻦ ﻣﻠﯿﻦ ﮐﺎ ﭘﯿﻨﭧ ، ﺩﻭ ﻣﻠﯿﻦ ﻟﯿﺒﺮ ﮐﯽ ﻣﺰﺩﻭﺭﯼ ﮐﺎ ﺍﻭﺭ ﺩﻭ ﻣﻠﯿﻦ ﭘﺮﺍﻓﭧ ﮐﺎ۔ ﺍﺏ ﭨﺮﻣﭗ ﻧﮯ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ﮐﮧ ﺗﻢ ﻧﮯ ﮐﺲ ﻃﺮﺡ ﺩﺱ ﻣﻠﯿﻦ ﮐﺎ ﺗﺨﻤﯿﻨﮧ ﻟﮕﺎﯾﺎ؟ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻧﯽ ﺑﻮﻻ، ﭼﺎﺭ ﻣﻠﯿﻦ ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ، ﺗﯿﻦ ﻣﻠﯿﻦ ﻣﯿﺮﮮ، ﺑﺎﻗﯽ ﺗﯿﻦ ﻣﻠﯿﻦ ﭼﺎﺋﻨﺰ ﮐﻮ ﺩﮮ ﮐﺮ ﭘﯿﻨﭧ ﮐﺮﻭﺍﻟﯿﮟ ﮔﮯ۔ *ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻧﯽ ٹھیکیدار ﮐﻮ ﭨﮭﯿﮑﮧ ﻣﻞ ﮔﯿﺎ۔😂😂😂😂

June 2, 2019 Baadban 0

پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ میں خواتین افسر کی کرپشن کی انتہا(PID) نگہت شاہ نے پریس کونسل آف پاکستان میں لاکھوں روپے کی گاڑیوں کی جعلی مرمت کروادی،سنگا پور اور دوبئی سے اپنا تین سال کی مقررہ پوسٹنگ سے غیر قانونی واپس آئیں اور حکومت پاکستان کو پچاس لاکھ کا نقصان پہنچایا، ہانگ کانگ سے خفیہ ایجنسی کی پورٹ پر توہین آمیز روئیے اور پاکستان کی بدنامی کا باعث بننے کی وجہ سے نکالی گئیں،16ویں کامن سے تعلق رکھنے والی نگہت شاہ نے پریس کونسل کا کتوں کے فارم ہائوس تک اور فارم ہائوس سے گھر تک لاکھوں روپے کا پٹرول ہوا میں اڑایا فوٹو سٹیٹ مشین لاکھوں روپے میں خریدی جس کی مالیت ہزاروں روپے میں تھی، چلی ائیرکنڈیشنڈ کو بھی لاکھوں روپے میں خریدا ، دو دفعہ حکومت کی گاڑی کتوں کی وجہ سے حادثہ کا شکار ہوئی جس پر لاکھوں روپے کے بل مکینک کو دئیے گئے، آڈٹ پیر بننے کے باوجود پیسے دینے سے انکاری ، پریس کونسل نے ریکوری کا خط سیکرٹری اطلاعات ونشریات کو لکھ دیا، ادارہ بادبان کے رپورٹر علی ارشاد نے موصوفہ سے موقف لینے کی کوشش کی تو انہوں نے موقف دینے سے انکار کردیا۔ نیب اور وزارت اطلاعات نے پریس انفارمیشن کی آفیسر نگہت شاہ کیخلاف تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے پریس کونسل آف پاکستان میں کی گئی کرپشن کے کاغذات نیب میں جمع بادبان رپورٹ : نیب اور وزارت اطلاعات نے نگہت شاہ کے خلاف تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔ پریس کونسل آف پاکستان میں کی گئی کرپشن کے کاغذات نیب میں جمع کر ا دئے گئے ہیں ۔ پوسٹ انٹرنیشنل کی نیوز پر سیکرٹری اطلاعات نے نگہت شاہ کی پی آئی ڈی سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ موصوفہ نگہت شاہ کر اثاثے چُھپانے کا بھی الزام ہے۔ پریس کونسل آف پاکستان کو 7 روز میں حقائق وزارت کو پیش کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ موصوفہ 20ویں گریڈ میں ہونے کے باوجود دفتر کی گاڑی بھی استعمال کر رہی ہیں اور 90 ہزار بھی وصول کر رہی ہیں ۔ موصوفہ سنگا پور اور دبئی میں اپنا مدت ملاذمت پورا کئے بغیر چھوڑ آئیں اور ہانگ کانگ سے بھی نکالا گیا تھا۔ وزارت اطلاعات کی نگہت شاہ کے متعلق جو لکھا سچ لکھا موصوفہ اچھی شہرت کی حامل ہوں گی لیکن پریس کونسل میں کرپشن میں ملوث رہی ہیں ۔ موصوفہ بیرون ملک اپنی پوسٹنگ چھوڑ کر واپس آ گئیں اور ملک کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچا۔ پوسٹ انٹرنیشنل اپنی خبر پر قائم ہے ۔ وزارت اطلاعات کی نگہت شاہ کے متعلق جو لکھا سچ لکھا۔موصوفہ پریس کونسل میں کرپشن میں ملوث ہیں ۔ کروڑوں روپے کا ملک کو نقصان پہنچایا اور بیرون ملک کی پوسٹنگ چھوڑ کر واپس آ گئیں ۔ نیب اور وزارت اطلاعات نے کرپشن کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔ کرپشن کی اس جنگ میں عمران خان کے ساتھ ہیں اور کرپشن کو ختم کرنے کے لئے ہر ممکن اقدام اُٹھائیں گے اور اس پاکستان کو ترقی یافتہ ممالک کی صف میں لاکھڑا کریں گے۔ شفقت جلیل وزارت اطلاعات کے افسران حکومت کی پروجیکشن کرنے کے بجائے عمران خان حکومت کو فیل کرنے کے لئے میدان میں اُتر آئے:بادبان رپورٹ بادبان رپورٹ : وزارت اطلاعات کے گریڈ 21 کے افسر جو اپنے آپ کو کائنات ِ کُل سمجھتا ہےشفقت جلیل نے 30 سالہ اپنی سروس میں بیرون ممالک کے سب سے زیادہ دورے کئے۔ دو اداروں پر سر براہی کی جن میں ایک ایکسٹرنل پبلیسٹی ونگ (ای پی ونگ) ہے ۔ وہاں پر باتھ رومز تک بند کر دیئے گئے ۔ خواتین افسران سمیت مرد افسران دوسرے دفاتر میں جاتے رہے۔ ایکسٹرنل پبلیسٹی ونگ (ای پی ونگ) وہ ونگ ہے جو بیرون ممالک پاکستان کے امیج کو بڑھاتا ہے۔ تین چار انفارمیشن گروپ کے ایسے افسران ہیں جو جہاں جاتے ہیں ادارے بند کرا کرہی آتے ہیں ۔ انفارمیشن گروپ کے کئی افسران پوسٹنگ کاٹنے کے بعد واپس نہیں آتے اور وزارت میں آنے کے بجائے وہاں پر اخباریں بیچتے ہیں ۔ ستم ظریفی اس حد تک ہے کہ اُن افسران میں محمد اعظم جیسے آفیسر سیکٹری اطلاعات بھی بنے۔ دانیال گیلانی اور شفقت جلیل ن لیگ کے اجنڈے پر ۔مریم اورنگزیب نے جاتے ہوئے دانیال گیلانی کو ڈائریکٹر جنرل ،منسٹر آفس لگایا جبکہ شفقت جلیل کو ایڈشنل سیکرٹری اور ڈائریکٹر جنرل ریڈیو لگایا۔ مریم نواز کے میڈیا گروپ کا نمبر ون سربراہ دانیال گیلانی تھا بادبان ٹی وی رپورٹ کے مطابق فوج اور بھارت کے لئے کام کرنے والا دانیال گیلانی گریڈ 18 میں مریم نواز کے سوشل میڈیا کا اہم کردار جس کو مریم نواز نے پانچ لاکھ ماہانہ کے انسینٹو پر پی آئی اے میں لگوایا۔ جب نواز شریف کو نکالا گیا تو اس شخص کو جو گریڈ 19 میں پروموٹ ہوا اور جونئیر ترین افسر تھا اس کو آڈٹ بیورو سرکولیشن میں لگایا ۔ یہ ایسے ہی ہے کہ فوج میں کسی کپتان کو کمانڈنگ افسر لگا دیا جائے۔ حکومت جانے سے قبل اس دانیال گیلانی کو مریم اورنگزیب نے اپنے ساتھ ڈائریکٹر جرنل لگا لیا۔ خاتون وزیر اس کو جوائنٹ سیکرٹری لگانا چاہتی تھی لیکن سیکرٹری اطلاعات احمد نواز سکھیرا نے اس کی مخالفت کی اور انہیں جے ایس نہیں لگنے دیا کیونکہ گریڈ انیس کا جونئیر ترین افسر جوائنٹ سیکرٹری نہیں لگ سکتا۔ اُس وقت کی موصوفہ وزیر اطلاعات نے اُس کو سنسر بورڈ کا چارج بھی دینے کی کوشش کی لیکن سیکرٹری اطلاعات نے روک دیا۔ موجودہ وزیر اطلاعات نے آتے ہی اس کو تبدیل کرنے کے احکامات جاری کئے لیکن تا حال موصوف دانیال گیلانی ابھی تک وہیں پر ہیں ۔ دانیال گیلانی کا والد مختلف ادوارمیں کرپشن اور غیر ملکی خاتون سے شادی کرنےکے بعد پروموشن لیتا رہا۔ گیلانی کا بھائی امریکہ میں بھارتی ایجنسی راء کے لئے کام کرتا ہے۔ اسی طرح شفقت جلیل کو مریم اورنگزیب نے ایڈیشنل سیکرٹری وزارت اطلاعات لگایا اور آخری وقت تک کوشش کرتی رہی کہ اس کو سیکرٹری لگایا جائے لیکن سپریم کورٹ کے واضح ہدائت کی وجہ سے وہ عمل نہ ہو سکا۔ موصوفہ نے شفقت جلیل کو ڈائریکٹر جنرل ریڈیو لگوایا۔ شفقت جلیل سابق وزیر اعظم شوکت عزیز کے فرنٹ مین کا کردارادا کرتے رہے ہیں اور غیر قانونی طریقے سے امریکہ میں پوسٹنگ بھی لی۔ شفقت جلیل نے ایکسٹرنل پبلیسٹی کو بند کرنے کے بعد اب ریڈیو پاکستان کو بھی بند کر دیا۔ ہزاروں ملازمین کا مستقبل خطرے میں۔ دانیال گیلانی جو کروڑوں روپے کی کرپشن میں ملوث اور جس کا بھائی راء کے لئے کام کرتا ہے، نے ریڈیوپاکستان کو بند کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا:بادبان الرٹ بادبان الرٹ : شفقت جلیل کے ایکسٹرنل پبلسٹی کو بند کروانے کے بعد اب ریڈیو پاکستان کو بھی بند کروا دیا۔ ریڈیو پاکستان کو شفٹ کرنے اور ریڈیو پاکستان کی بلڈنگ کو لیز پر دینے کا نوٹیفیکیشن جاری کر دیا گیا۔ یہ نوٹیفیکیشن دانیال گیلانی جو کہ کروڑوں روپے کی کرپشن میں بھی ملوث ہے اور اُنکا بھائی لندن میں بھارتی ایجنسی راء کے لئے بھی کام کرتا ہے ، نے جاری کیا ہے۔ نوٹیفیکیشن کی تصاویر نیچے ملاحضہ ہے حج کرپشن حج 2018: حجاج رُل گئے ، بارہ ارب روپے سے ذائد کرپشن ، کیا عمران خان ایکشن لیں گے؟ چھ روز سے حاجی حرم میں نماز پڑھنے کے لئے نہیں جا پائے اور اس کا کوئی نعملبدل نہیں ہوتا ۔ عزیزیہ میں جو بلڈنگز لی گئیں اُسی جگہ پر بھارت نے 200 ریال کم میں بلڈنگ لی۔ جبکہ پاکستانیوں نے 200 ریال زیادہ میں بلڈنگ لی۔ اسی طرح مدینہ مرکزیہ میں 80 ریال فی حاجی بلڈنگ زیادہ لی گئی ۔ آج منٰی جانے والی بسیں بھی حاجیوں کا مل نہ پائیں ۔ اب تک دن گیارہ بجے تک سعودی عرب ٹائم کے مطابق منٰی نہیں پہنچ پائے۔ اب تک سرکاری حاجیوں کی رہائشیں مزلفہ میں ہیں ۔ پاکستان کے زیادہ تر مکاتب انتہائی دور جبکہ انتہائی کم اولڈ منٰی میں ہیں ۔ متٰی قریش میں حاجیوں کے لئے بلڈنگز لی گئیں جو پندرہ کلومیٹر سے بھی دور ہیں ۔اور اُنکا ریٹس انتہائی نا مناسب اور زیادہ ہے ۔ متٰی قریش میں کوئی اور ملک بلڈنگ نہیں لیتا۔ حیرت انگیز طور پر حجاج اکرام کو جو کھانا بھی دیا جا رہا ہے اُس میں بھی کمیشن لی جا رہی ہے۔ چار سے پانچ ٹھیکیداروں کو جس کا ٹھیکا دیا گیا ہے جو ڈائیریکٹریٹ آف حج ذرائع کے مطابق بلڈنگز کا بھی کاروبار کرتے ہیں ۔ ستم ظریفی اس حد تک ہوئی کہ پانچ سو سے ذائد حاجی کھانا کھانے کی وجہ سے بیمار ہیں ۔ میڈیکل مشن کے مطابق روزانہ پانچ ہزار سے زائد حجاج مریض آتے ہیں جن میں سے زیادہ کھانے کی وجہ سے بیمار ہوتے ہیں ۔ فی حاجی انیس سے اکیس ریال کے درمیان کھانے کا ٹھیکہ دیا گیا جو چالیس روز تک جاری رہتا ہے جن میں سے سات ریال فی حاجی ٹھیکیدار حج انتظامیہ کو کمیشن دیتے ہیں ۔ مکہ میں پورا سال ڈائریکٹوریٹ آف حج جو کونسلیٹ آف حج کے زیر سایہ حج کرتے ہیں ۔ ایک حج میں سولہ ارب روپے کی کرپشن کرتے ہیں ۔ کرپشن کا چارٹ مندرجہ زیل ہے : بلڈنگ میں کرپشن ٹوٹل حاجی : 1 لاکھ چار ہزار کرپشن فی کس : 200 ریال فی ریال : 30 ٹوٹل کرپشن : 64 کروڑ کرپشن بس میں کرپشن ٹوٹل حاجی : 1 لاکھ چار ہزار کرایہ فی کس : 201 فی ریال : 30 ٹوٹل کرپشن : 63 کروڑ کرپشن کھانے میں کرپشن ٹوٹل حاجی : 1 لاکھ چار ہزار 35: دن ریال 7: کرپشن فی کس ٹوٹل کرپشن : 64 کروڑ 90 لاکھ کرپشن اسی طرح اگر مدینہ میں تقریبََ ایک سو نوے ریال مرکزیہ میں حاجیوں کی بلڈنگ فی حاجی زیادہ ریٹس پر لی گئیں ۔ جس کی مالیت کرپشن درج زیل ہے ۔ مدینہ میں بلڈنگز پر کرپشن ٹوٹل حاجی : 1 لاکھ چار ہزار فی کس کرپشن 190 ریال فی ریال : 30 ٹوٹل کرپشن : 57 کروڑ روپے کرپشن ۔ اسی طرح کیپٹن آفتاب جو ایڈیشنل سیکٹری ہیں ، وفاقی وزیر جانے کے بعد کوئی جوانٹ سیکٹری حج نہیں رکھا گیا۔ ھارڈ شپ کے نام پر فارموں کی ایک لاکھ فی فارم فروخت کی گئی۔ جو آٹھ ہزار نو سو فارم ہادڑ شپ کے نام پر کیپٹن آفتاب نے فروخت کیا اور اس کے ساتھ منیر اور عاصم رضوی سمیت ڈپٹی سیکٹری حج ملوث تھے لیکن سیکٹری خالد مسعود چوہدری نے ایکشن نہیں لیا۔ کیا وہ بھی اس میں براہ راست یا بلواسطہ ملوث پائے گئے۔ ذرائع کے مطابق سابق وفاقی وزیر نے نیب میں درخواست کی کہ پچیس کمپنیوں کو سیکٹری نے غیرقانونی کوٹہ پچاس کروڑ لے کر دیا جس کی تحقیقات جاری ہیں حج کرپشن ۔ بڑے نام کرپشن کی ذد میں ۔ بادبان سپیشل رپورٹ 100 ارب روپے کی کرپشن کھانوں سے لیے کر بلڈنگ اور عمارتوں سے چلتی ھوی حجاج کی بسوں تک منی کےتکیوں اور وزارت کے فارم اور کوٹوں ابو عاکف سے کیپٹن آفتاب تک بادبان رپورٹ کیپٹن آفتاب کینڈا بھاگنے کی کوشش میں مصروف ہیں فیملی بچے کینڈا مے معراج خالد سے حجاج کی کرپشن کا سفر بادبان رپورٹ شاھد خان سکندر اسمائیل عامر سھیل مرزا شاھد خان ابو عاکف رافع شاہ اور خورشید شاہ ملوث وزیر اعظم ان ایکشن چیف جسٹس نے حج کرپشن مے 100 ارب روپے کی کرپشن پر رپورٹ طلب نواز لیگ حجاج کرام کو کیسے ٹیکنالوجی سے لوٹتے رھے وزیر اعظم کے احکامات کھُو کھاتے۔ کرپشن چُھپانے کے لئے وزارتِ حج کے سیکٹری نے کروڑوں کے اشتہارات جاری کر دئے وزارت مذہبی امور نے 2018 حج میں 16 ارب روپے کی کرپشن کرنے کے بعد اُس کو چُھپانے کے لئے کروڑوں روپے کے اشتہارات کی بندر بانٹ شروع کر دی ۔ وزیر اعظم عمران خان کے احکامات کو کھو کھاتے میں ڈال دیا۔ سیکٹری مذہبی امور خالد مسعود چوہدری جن کے خلاف نیب تحقیقات کر رہی ہے کہ انہوں نےتقریباََ 25 کمپنیوںسے 50 کروڑ روپے سے زائد پیسہ لے کراُن کو کوٹہ دیا اور اُس کے ایڈیشنل سیکر ٹری نے ایک ہزار سے زائد ہارڈ شِپ فارم کو فروخت کیا ۔ کیپٹن آفتاب جو کینیڈین شہری ہے ، اُس کے بیوی بچے کینیڈا میں رہ رہے ہیں ۔ وہ بھاگ چُکا ہے یا تیاری کر ریا ہے ۔ یہ موصوف سیکٹری اس کرپشن کو چُھپانے کے لئے چار ماہ سے تین ٹوپیاں پہن رکھیں ہیں جن میں جوائنٹ سیکٹری حج، سیکٹری حج اور وزیر حجشامل ہیں ۔ وزیر حج نگران کو دفتر میں ہی داخل نہیں ہونے دیا گیا۔ وزیر حج نگران ریٹائرڈ میجر ایجوکیشن کور میں سے تھے ۔ ستم ظریفی اس حد تک جا پہنچی کہ 85 حجاج سے پیسے بھی لے لئے گئے اور اُن کو فارم بھی ایشو کر دئے گئے ۔ ان حجاج سے پیسے بینکس کی مختلف برانچز میں جمع کروائے گئے جس میں ڈپٹی سیکٹری حج کیپٹن آفتاب اور سیکٹری حج بھی ملوث تھا۔ سیکرٹریحج نے گونگلوںسےمٹی کو جھاڑنے کے لئے کیس ٖایف آئی اے کو ریفر کر دیا۔ کیا وزیر اعظم عمران خان خالد مسعود چوہدری کو گرفتار کرنے کے احکامات جاری کریں گے ؟ اور ایڈیشنل سیکٹری کو اڈیالہ جیل بھجوائیں گے ؟

June 2, 2019 Baadban 63