مولانا فضل الرحمن زرداری ملاقات سابق صدر نے عمران مائنس فارمولا مسترد کردیا. Click on the link to see full news on BAADBAN TV

مولانافضل الرحمن کی آصف علی زرداری اوربلاول بھٹو سے بلاول ہائوس میں ملاقات
ملاقات میں پیپلزپارٹی اور جمعیت علمائے اسلام نے ملکی سالمیت اور بقاء کے خاطر سیاسی امور میں ساتھ چلنے پربھی اتفاق کیا
عوام دشمن بجٹ اور این ایف سی ایوارڈ سے متعلق کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا،میں نے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ عمران خان حکومت چلانے کے اہل نہیں ہیں،آصف زرداری


عمران خان نیب کو استعمال کرکے اپوزیشن جماعتوں کے سیاست دانوں سے انتقام لے رہے ہیں،دوسال ہوگئے ہیں،عمران نے کوئی ایک ایسا کام نہیں کیا جو عوامی مفاد میں ہو، بلاول بھٹوزرداری
پی ٹی آئی حکومت نے ملکی معیشت کو دیوار سے لگادیا ہے۔پاکستان کی تاریخ میں کبھی معیشت کی منفی شرح نمو نہیں ہوئی۔اگر معیشت کو بچانا ہے تو سب نے ملک کر سلیکٹڈ حکمرانوں کا مقابلہ کرنا ہوگا، مولانافضل الرحمن
کراچی(پوسٹ رپورٹ)جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانافضل الرحمن نے جمعہ کو بلاول ہائوس میںسابق صدرمملکت آصف علی زرداری اورپاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری سے ملاقات کی،ملاقات ڈیڑھ گھنٹے تک جاری رہی۔مولانا فضل الرحمان نے سابق صدر آصف علی زرداری کی صحت سے متعلق خیریت دریافت کی۔اس موقع پرسابق صدر آصف علی زرداری ،بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان اہم سیاسی امور پر تبادلہ خیال کیاگیا۔پاکستان پیپلزپارٹی اور جمعیت علمائے اسلام نے ملکی سالمیت اور بقاء کے خاطر سیاسی امور میں ساتھ چلنے پر اتفاق کیا۔سابق صدر آصف علی زرداری، بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحماننے این ایف سی ایوارڈ پر غیرلچکدار موقف اپنانے پربھی اتفاق کیا۔ملاقات میں سابق صدر آصف علی زرداری، بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان 18ویں آئینی ترمیم پر بھی غیرلچکدار موقف اپنانے پر اتفاق کیاگیا۔اس موقع پرآصف علی زرداری نے کہاکہ عوام دشمن بجٹ اور این ایف سی ایوارڈ سے متعلق کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔میں نے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ عمران خان حکومت چلانے کے اہل نہیں ہیں۔انہوں نے کہاکہگزشتہ برس میں نے ٹِڈی دل کے حملوں سے متعلق پارلیمان میں حکومت کو خبردار کیا تھا۔حکومت نے اپنی ضد اور انا کی وجہ سے ٹِڈی دل کے حملوں سے متعلق میرے خدشات کو سنجیدہ نہیں لیا۔اگر ٹِڈی دل کے حملوں کی فوری روک تھام نہ کی گئی تو ملک میں خوراک کا بحران پیدا ہوجائے گا۔سابق صدر نے کہاکہعوام امید کی نظروں سے ملک کی اپوزیشن جماعتوں کی جانب دیکھ رہے ہیں کہ وہ سلیکٹڈ حکومت سے انہیں نجات دلائیں۔آصف علی زرداری نے کہاکہ کرونا وائرس کے بحران کے دنوں میں عمران خان کی نااہلی کھل کر سامنے آچکی ہے۔اس موقع پر بلاول بھٹوزرداری نے کہاکہ پاکستان اور عمران خان ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔عمران خان کے دورِحکومت میں ملک میں سب سے زیادہ کرپشن میں اضافہ ہوا۔عمران خان نیب کو استعمال کرکے اپوزیشن جماعتوں کے سیاست دانوں سے انتقام لے رہے ہیں۔دوسال ہوگئے ہیں، عمران خان نے کوئی ایک ایسا کام نہیں کیا جو عوامی مفاد میں ہو۔ملک کی تمام اپوزیشن جماعتیں سلیکٹڈ حکومت کے خلاف ایک پیچ پر ہیں۔اس موقع پرمولانافضل الرحمن نے آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری کے نکات سے اتفاق کیا۔مولانافضل الرحمن نے کہاکہ پی ٹی آئی حکومت نے ملکی معیشت کو دیوار سے لگادیا ہے۔پاکستان کی تاریخ میں کبھی معیشت کی منفی شرح نمو نہیں ہوئی۔اگر معیشت کو بچانا ہے تو سب نے ملک کر سلیکٹڈ حکمرانوں کا مقابلہ کرنا ہوگا