وزارت خارجہ کے بابوز کو کنٹرول کرنے کا فیصلہ وزیر اعطم عمران خان نے ایکشن کے ساتھ نوٹیفکشین جاری کر دیا تفصیلات کے لئے کلک کرے

دنیا بھر میں موجود پاکستانی سفارت خانوں کو عالمی سیاسی ، اقتصادی و تجارتی تعلقات کے تناظر میں حکومت پاکستان کا موثر ترین ہتھیار ثابت کئے جانے کی بجائے
ہمارے کوتاہ نظر حکمرانوں نے انہیں اپنی آو بھگت اور شناختی کارڈ ، پاسپورٹ ، ویزہ اور میتیں پاکستان روانہ کرنے والا ایک عام سا دفتر بنا کر رکھ چھوڑا تھا
اب “نئے پاکستان” والوں نے اسے دوبارہ سفارتی ذمہ داریوں کی جانب مائل کرنے کی اپنی سی کوشش کا آغاز یوں کرنے کا عندیہ دیا ہے کہ رواں سال اکتیس جنوری کے بعد ویزہ کے حصول کے خواہشمند افراد کو یہ سہولت آن لائن فراہم کر دی جایاکرے گی
شناختی کارڈ ، پاسپورٹ اور کاغذات کی تصدیق کا کام پہلے ہی نیشنل ڈیٹا بیس رجسٹریشن اتھارٹی اور وزارت خارجہ کا ایک ڈویژن مشترکہ طور پر آن لائن کر رہا ہے
اُمید کی جانی چاہئیے کہ
اب ہمارے قونصل جنرل اور ایمبیسیڈر صاحبان
جہاں جہاں بھی تعینات ہیں وہاں کی حکومتوں کے ذمہ داران کے ساتھ پاکستان کے سیاسی ، سفارتی ، تجارتی اور دوطرفہ تعاون کے دیگر تمام شعبوں میں تعلقات کے فروغ کی جانب پہلے سے زیادہ یکسوئی سے کام کر سکیں گے
سنا ہے وزارت خارجہ کے اِن بڑے بابوؤں کی کارکردگی روزانہ کی بنیاد پر مانیٹر کرنے کے لئے عمران خان کوئی ایپ متعارف کرا رہے ہیں 🤔
پتہ نہیں یہ زیادہ خطرے والی بات ہے
یا قابل اطمینان امر ہے کہ پاکستان کا نائی کاپ ( اوورسیز پاکستانیوں کا قومی شناختی کارڈ) رکھنے والا ہر شخص وزیراعظم پاکستان اور وزیر خارجہ پاکستان کی طرح لاگ اِن ہو کر ڈیش بورڈ پر پڑی یہ کارکردگی جب چاہے دیکھ سکے گا 🙃
۔
دیکھیں یہ نئی تبدیلی کیا رنگ لاتی ہے