اسلام آباد کی مقامی عدالت میں کمسن ملازمہ رضوانہ تشدد کیس کی سماعت ۔۔۔۔ آج ملزمہ سومیاعاصم کو نقول فراہم نہ کی جاسکیں ۔۔۔ مدعی وکیل نے سومیاعاصم کی ویڈیواور کال ڈیٹا کی فراہمی کی درخواستوں پر دلائل دینے کے لیے وقت مانگ لیا ۔۔۔۔ عدالت نے فریقین سے 19 دسمبر کو دلائل طلب کرلیے ۔۔۔ Click on the link to see full news on BAADBAN TV

ISB OCVO RIZWANA CASE اسلام آباد کی مقامی عدالت میں کمسن ملازمہ رضوانہ تشدد کیس کی سماعت ۔۔۔۔ آج ملزمہ سومیاعاصم کو نقول فراہم نہ کی جاسکیں ۔۔۔ مدعی وکیل نے سومیاعاصم کی ویڈیواور کال ڈیٹا کی فراہمی کی درخواستوں پر دلائل دینے کے لیے وقت مانگ لیا ۔۔۔۔ عدالت نے فریقین سے 19 دسمبر کو دلائل طلب کرلیے ۔۔۔ وی او رضوانہ تشدد کیس کی سماعت جوڈیشل مجسٹریٹ عمرشبیر کی عدالت میں ہوئی ۔۔۔۔ ملزمہ سومیاعاصم کی جانب سے وکیل قاضی دستگیر نےبس ٹرمینل، ہاؤسنگ سوسائٹی کے انٹری گیٹ کی سی سی ٹی وی مہیا کرنےاوررضوانہ کی والدہ و دیگر اہلہ خانہ کا کال ڈیٹا ریکارڈ کا فرانزک کروانے کی درخواست دائر کی۔۔۔۔ کہا کہ جرح کرنے کے لیے سومیاعاصم کو سی سی ٹی وی فوٹیج فراہم کرنا اور فوٹیجز کی فرانزک کروانا بھی انتہائی اہم ہے۔۔۔،مدعی کےوکیل نے موقف اپنایا کہ فردجرم کی کاروائی کو موخر کرنے کے لیے تاخیری حربے استعمال کیے جارہے ہیں ۔۔۔۔ مدعی وکیل نے سومیاعاصم کی درخواستوں پر دلائل دینے کے لیے وقت مانگ لیا ۔۔۔۔ عدالت نےسی سی ٹی وی اور سی ڈی آر سے متعلق درخواست پر فریقین سے 19 دسمبر کو دلائل طلب کرلیے۔۔۔۔