Consumers will have to pay a waiver bill in the name of Prime Minister Relief Fund. Bills ranging from Rs 100,000 to Rs 450,000 were waived for industry and commercial consumers. Electricity bills less than 300 units will have to be paid in installments, double standards of government revealed. Click on the link to see full news on BAADBAN TV

صارفین کودھوکا، وزیراعظم ریلیف کے نام پرمعاف بل ادا کرنا ہونگے
صنعت اور کمرشل صارفین کو ایک لاکھ سے 4 لاکھ 50 ہزار تک کا بل معاف کر دیا گیا
300 یونٹ سے کم بجلی کے بل اقساط میں ادا کرنا ہونگے،حکومت کا دوہرا معیار کھل کر سامنے آ گیا
اسلام آباد (پوسٹ رپورٹ) وفاقی حکومت نے گھریلو صارفین کے ساتھ ہاتھ کر دیا، صنعتوں اور کمرشل صارفین کو تین ماہ کا بل معاف جبکہ گھریلو صارفی کو اقساط میں ادا کرنا ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے گھریلو صارفین کو دھوکہ دے دیا۔ کورونا وائرس کی صورتحال پیدا ہونے کیبعد لاک ڈاؤن میں گھریلو صارفین کا تین ماہ کا بل معاف کر دیا گیا تھا، جس کے مطابق بلوں پر وزیراعظم ریلیف کا ٹیگ بھی لگایا گیا۔تاہم اب رپورٹس سامنے آئی ہیں کہ گھریلو صارفین کو معاف کردہ بھی اقساط میں ادا کرنا ہوگا۔ یہ بات بھی قابل غور رہے حکومت نے 300 یونٹ سے کم گھریلو صارفین کو بلوں کی اقساط کی سہولت فراہم کی ہے۔ تاہم دوسری جانب صنعتی و کمرشل صارفین کو 5 کلوواٹ سے لیکر 70 کلو واٹ تک کے بجلی کے بل معاف کر دیئے گئے ہیں۔لیسکو مین تین سو یونٹ تک بجلی استعمال کرنے والوں کو اقساط کی سہولت دی گئی ہے جس کو وزیر اعظم ریلیف کا نام دیا جا رہا ہے۔حکومت کا دوہرا معیار کھل کر سامنے آ گیا ہے۔ حکومت صنعت اور کمرشل صارفین کا 4لاکھ 50 ہزار تک کا بل ادا کرے گی۔ملک بھر میں جاری کورونا وائرس کی صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے چھوٹے تاجروں کے لئے امدادی ییکچ برائے سمال بزنس کی بنیاد رکھی تھی جس کی بنیاد پر انہیں مختلف قسم کے ریلیف فراہم کئے جا رہے ہیں