Coronavirus has started to target the saviours, 4 doctors lost there lives. Doctors of Lahore who lost their lives due to Corona are Sana Fatima and Salman Tahir. Dr. Naeem Akhtar of Gujranwala also died due to corona virus was undergoing treatment at Services Hospital. Click on the link to see full news on BAADBAN TV

کورونا وائرس مسیحائوں کو نشانہ بنانا شروع کردیا

4 جاں بح
کورونا سے زندگی کی بازی ہارنے والے لاہور کے ڈاکٹرز کا نام ثنا فاطمہ اور سلمان طاہر ہیں
گوجرانوالہ کے ڈاکٹر نعیم اختر بھی کورونا وائرس کے باعث دم توڑ گئے سروسز ہسپتال میں زیر علاج تھے
لاہور(پوسٹ رپورٹ)کورونا وائرس سے جاں بحق ڈاکٹرز میں سے دو کا تعلق لاہور، ایک کا گوجرانوالہ اور ایک ہنگو سے ہے۔ لاہور جنرل ہسپتال کے ایم ایس بھی وبائی مرض کا شکار ہوکر آئسولیشن میں چلے گئے ہیں۔تفصیل کے مطابق کورونا وائرس کیساتھ فرنٹ لائن پر لڑنے والے ڈاکٹرز خود ہی اس مرض کا شکار بن کر اپنی جانیں گنوا رہے ہیں۔ کورونا سے زندگی کی بازی ہارنے والے لاہور کے ڈاکٹرز کا نام ثنا فاطمہ اور سلمان طاہر ہیں۔ ڈاکٹر ثنا فاطمہ ایف سی پی ایس جبکہ سلمان طاہر ایم بی بی ایس فورتھ ایئر کے طالب علم تھے۔نجی لیبارٹری میں کام کرنے والی 39 سالہ سینئر ڈاکٹر ثنا فاطمہ 20 مئی سے نجی ہسپتال کے آئی سی یو میں زیر علاج تھیں جو آج طبعیت بگڑنے کے باعث خالق حقیقی سے جا ملیں۔دوسری جانب لاہور کے نجی میڈیکل کالج کے ایم بی بی ایس فورتھ ائیر کے طالبعلم سلمان طاہر کو تیز بخار کے باعث داخل کروایا گیا، مگر کورونا کا وائرل لوڈ زیادہ ہونے کے باعث 24 گھنٹوں میں ہی ان کی نجی ہسپتال کے آئی سی یو میں موت واقع ہوگئی۔ڈاکٹر سلمان طاہر کے والد پروفیسر طاہر سلیم نجی ہسپتال میں پیڈیاٹرک وارڈ کے انچارج جبکہ ان کی والدہ ڈاکٹر شبانہ نجی ہسپتال میں گائنالوجسٹ ہیں۔ادھر گوجرانوالہ کے ڈاکٹر نعیم اختر بھی کورونا وائرس کے باعث دم توڑ گئے ہیں۔ وہ لاہور کے سروسز ہسپتال میں زیر علاج تھے اور سوشل سیکیورٹی ہسپتال میں ڈیوٹی سرانجام دے رہے تھے۔ ڈاکٹر نعیم اختر ماہر نفسیات تھے۔ پی ایم اے گوجرانوالہ نے سینئر ڈاکٹر کی موت پر رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے یوم سیاہ منایا۔اسی طرح لاہور جنرل ہسپتال کے ایم ایس بھی کورونا کا شکار ہوکر آئسولیشن میں چلے گئے ہیں۔ ڈاکٹر محمود صلاح الدین کی آج رپورٹ پازیٹو آئی تھی جس کے بعد انھیں ہوم آئسولیٹ کردیا گیا ہے۔خبریں ہیں کہ پشاور میں بھی کورونا وائرس میں مبتلا ایک ڈاکٹر نے دم توڑ دیا ہے۔ جاں بحق ڈاکٹر کا تعلق ہنگو کے نجی ہسپتال سے تھا۔کورونا وائرس مسیحائوں کو نشانہ بنانا شروع کردیا، 4 جاں بحق
کورونا سے زندگی کی بازی ہارنے والے لاہور کے ڈاکٹرز کا نام ثنا فاطمہ اور سلمان طاہر ہیں
گوجرانوالہ کے ڈاکٹر نعیم اختر بھی کورونا وائرس کے باعث دم توڑ گئے سروسز ہسپتال میں زیر علاج تھے
لاہور(پوسٹ رپورٹ)کورونا وائرس سے جاں بحق ڈاکٹرز میں سے دو کا تعلق لاہور، ایک کا گوجرانوالہ اور ایک ہنگو سے ہے۔ لاہور جنرل ہسپتال کے ایم ایس بھی وبائی مرض کا شکار ہوکر آئسولیشن میں چلے گئے ہیں۔تفصیل کے مطابق کورونا وائرس کیساتھ فرنٹ لائن پر لڑنے والے ڈاکٹرز خود ہی اس مرض کا شکار بن کر اپنی جانیں گنوا رہے ہیں۔ کورونا سے زندگی کی بازی ہارنے والے لاہور کے ڈاکٹرز کا نام ثنا فاطمہ اور سلمان طاہر ہیں۔ ڈاکٹر ثنا فاطمہ ایف سی پی ایس جبکہ سلمان طاہر ایم بی بی ایس فورتھ ایئر کے طالب علم تھے۔نجی لیبارٹری میں کام کرنے والی 39 سالہ سینئر ڈاکٹر ثنا فاطمہ 20 مئی سے نجی ہسپتال کے آئی سی یو میں زیر علاج تھیں جو آج طبعیت بگڑنے کے باعث خالق حقیقی سے جا ملیں۔دوسری جانب لاہور کے نجی میڈیکل کالج کے ایم بی بی ایس فورتھ ائیر کے طالبعلم سلمان طاہر کو تیز بخار کے باعث داخل کروایا گیا، مگر کورونا کا وائرل لوڈ زیادہ ہونے کے باعث 24 گھنٹوں میں ہی ان کی نجی ہسپتال کے آئی سی یو میں موت واقع ہوگئی۔ڈاکٹر سلمان طاہر کے والد پروفیسر طاہر سلیم نجی ہسپتال میں پیڈیاٹرک وارڈ کے انچارج جبکہ ان کی والدہ ڈاکٹر شبانہ نجی ہسپتال میں گائنالوجسٹ ہیں۔ادھر گوجرانوالہ کے ڈاکٹر نعیم اختر بھی کورونا وائرس کے باعث دم توڑ گئے ہیں۔ وہ لاہور کے سروسز ہسپتال میں زیر علاج تھے اور سوشل سیکیورٹی ہسپتال میں ڈیوٹی سرانجام دے رہے تھے۔ ڈاکٹر نعیم اختر ماہر نفسیات تھے۔ پی ایم اے گوجرانوالہ نے سینئر ڈاکٹر کی موت پر رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے یوم سیاہ منایا۔اسی طرح لاہور جنرل ہسپتال کے ایم ایس بھی کورونا کا شکار ہوکر آئسولیشن میں چلے گئے ہیں۔ ڈاکٹر محمود صلاح الدین کی آج رپورٹ پازیٹو آئی تھی جس کے بعد انھیں ہوم آئسولیٹ کردیا گیا ہے۔خبریں ہیں کہ پشاور میں بھی کورونا وائرس میں مبتلا ایک ڈاکٹر نے دم توڑ دیا ہے۔ جاں بحق ڈاکٹر کا تعلق ہنگو کے نجی ہسپتال سے تھا۔