طالبان قیادت جلد گرفتارہوگی یا ماری جائے گی، عاصم سلیم باجوہ

طالبان قیادت جلد گرفتارہوگی یا ماری جائے گی، عاصم سلیم باجوہ

کراچی: ڈی جی آئی ایس پی آرمیجرل سلیم عاصم باجوہ کا کہنا ہے کالعدم تحریک طالبان کی قیادت افغانستان میں ہے گرفتارہوگی یا ماری جائے گی۔

گزشتہ سال کراچی میں ایئرپورٹ حملے کے بعد تحریک ِ طالبان پاکستان کے خلاف آ پریشن ضربِ عضب 15 جون 2014کو شروع کیا گیا تھا۔

آج اس آپریشن کو ایک سال مکمل ہورہا ہے اس موقع پرڈی جی آئی ایس پی آرعاصم سلیم باجوہ نے اے آروائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پوری قوم دہشت گردوں کے خلاف متحد ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں پر پاکستان کی زمین روزبروزتنگ ہورہی ہے آپریشن خیبرون مکمل ہوچکا ہے جبکہ شمالی وزیرستان کا بھی 90 فیصد علاقہ واگزارکرایا جاچکا ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ گرفتار شدہ دہشت گردوں کی تعداد ہزاروں میں ہے جن میں انتہائی مطلوب دہشت گرد بھی شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کا اپنی کمیں گاہوں سے باہر نکلنا دشورا ہوچکا ہے اور ان کے ٹھکانوں کو ختم کرنے کے لئے آپرشین تاحال جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ کالعدم تحریکِ طالبان کی مرکزی قیادت افغانستان میں قیام پذیرہے جو کہ جلد گرفتار ہوں گے یا مارے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام اب کسی بھی اجنبی شخص کو اپنے محلے میں نہیں رہنے دیتے ۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومتی اورسیاسی سطح پربھی کام ہورہا ہے، دہشت گردوں کی فنڈنگ بند کرنے پر بھی کام کیا جارہا ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہان تھا کہ دہشت گردوں کے خلاف جاری آپریشن جلد اپنے منطقی انجام تک پہنچے گا۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.