تازہ تر ین

افغانستان سے پاکستان میں دراندازی کرنے والا ایک اور افغان دہشتگرد گرفتار* افغان دہشتگردوں کی پاکستان میں در اندازی کا نہ رکنے والا سلسلہ جاری ہے جس کے مزید ثبوت منظرِ عام پر آگئےپاکستان میں دو دہائیوں پر محیط جاری دہشتگردی میں افغان دہشتگردوں کا کردار روز روشن کی طرح عیاں ہے Click on the link to see full news on BAADBAN TV

*بریکنگ**افغانستان سے پاکستان میں دراندازی کرنے والا ایک اور افغان دہشتگرد گرفتار* افغان دہشتگردوں کی پاکستان میں در اندازی کا نہ رکنے والا سلسلہ جاری ہے جس کے مزید ثبوت منظرِ عام پر آگئےپاکستان میں دو دہائیوں پر محیط جاری دہشتگردی میں افغان دہشتگردوں کا کردار روز روشن کی طرح عیاں ہےافغانستان سے پاکستان میں دہشتگردی پھیلانے والی تنظیموں میں ٹی ٹی پی،جماعت الاحرار اور بلوچ دہشتگرد تنظیمیں سر فہرست ہیں پاکستان میں جاری دہشتگردی کی بڑھتی لہر میں ٹی ٹی پی اور افغان دہشتگردوں کا مرکزی کردار رہا ہےپاکستان پر حملہ آورافغان دہشتگردوں کی آماجگاہیں افغانستان کے علاقے کنڑ، نورستان، پکتیکا، خوست و دیگر علاقوں میں موجود ہیں 23اپریل 2024کوبلوچستان کے علاقے ضلع پشین میں سیکیورٹی فورسز کے انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کے دوران3دہشتگرد ہلاک جبکہ ایک دہشتگرد زخمی حالت میں گرفتارہواگرفتاردہشتگرد کا نام حبیب اللہ عرف خالد ولد خان محمد ہے حبیب اللہ افغانستان کے علاقے سپن بولدک کا رہائشی ہے افغا ن دہشتگرد نے اعترافی بیان میں پاکستان میں دہشتگردانہ کارروائیوں کا اعتراف بھی کیا ”بلوچستان کے علاقے پشین میں حملے کی منصوبہ بندی افغانستان سے کی گئی“ (دہشتگرد حبیب اللہ کا اعترافی بیان)”حملے کے لئے ہمارے دو بندوں کو راکٹ لانچر، گرنیڈ اورا سلحہ سے فراہم کیا گیا“(دہشتگرد حبیب اللہ کا اعترافی بیان)”ہمیں افغانستان کے بارڈر تک افغان طالبان نے مکمل مدد فراہم کی“(دہشتگرد حبیب اللہ کا اعترافی بیان)”پاکستان کی سیکیورٹی فورسز نے ہمیں نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں ہمارے دو ساتھی مارے گئے اور میں زخمی ہو گیا“(دہشتگرد حبیب اللہ کا اعترافی بیان)”گرفتاری کے بعد احساس ہوا کہ ہمیں اس حملے کے لئے ورغلایا گیا جو بہت بڑی غلطی تھی“(دہشتگرد حبیب اللہ کا اعترافی بیان)”مفتی صاحب کی وجہ سے ہم اور ہمارے گھر والے برباد ہو گئے“(دہشتگرد حبیب اللہ کا اعترافی بیان)حال ہی میں افغانستان سے پاکستان میں در اندازی کی کوشش کے دوران ہلاک کئے جانے والے7 دہشتگردوں میں ملک الدین مصباح افغانستان کا شہری اور صوبہ پکتیکا کا رہائشی تھا افغان دہشتگردوں کے پاکستان پر حملوں کی طویل فہرست میں سے چند کی تفصیلات کچھ یوں ہیں؛ مسلم باغ ایف سی کیمپ اور ژوب کینٹ پر حالیہ حملے کے دوران ہلاک ہونے والے افغان دہشتگردوں میں حنیف، حنزیلہ، مصطفیٰ گر، رحمت، محبت اللہ، عمیر اور عثمان خان شامل تھے 2022 کے دوران پاکستان میں خود کش حملوں میں ملوث افغان خود کش بمبار نصیب زردان، قاری زبیر، ضیا ء اللہ، ضیاء الرحمان اور خالد پیش پیش رہےماضی میں بھی بین الاقوامی سرحد پر لگائی گئی باڑ کو عبور کرکے پاکستان میں دراندازی کی کوشش میں مارے جانے والے دہشتگردوں میں افغان علاقے خوست کا رہائشی عماد اللہ، محمد خالد، احسان اللہ اور شوکت اللہ شامل تھے30 جنوری 2023 کو پولیس لائنز پشاور پر خود کش حملے میں ملوث اور 21 جولائی2023کو ژوب کینٹ پر حملے میں مارے جانے والے 3 افغان دہشتگردوں کا تعلق بھی افغانستان سے تھا12 مئی 2023 کو مسلم باغ میں ہونے والے دہشتگرد حملے میں 5 جبکہ 12 جولائی 2023 کو ژوب کینٹ پر ہونے والے حملے میں بھی 3 افغان دہشتگرد شامل تھےگرفتار دہشتگردوں کے یہ اعترافی بیان اس بات کا واضح ثبوت ہیں کہ؛”افغان طالبان کے کابل پر قبضے کے بعد پاکستان میں دہشتگردی کی کارروائیاں بڑھ گئی ہیں“افغان سرزمین سے دہشتگردوں کےپاکستان پر حملے دوہا معاہدے کی سراسر خلاف ورزی ہیں اقوام متحدہ اور بین الاقوامی طاقتوں کو افغانستان کی جانب سے مسلسل دراندازی اور دہشت گرد حملوں کا سختی سے نوٹس لے کر زمہ داران کیخلاف سخت کارروائی کرنے کی ضرورت ہے اب یہ فیصلہ افغان طالبان نے کرنا ہے کہ؛”انہوں نے دہشتگردی کو پروان چڑھانا ہے یا اسے ختم کرنے کیلئے کوئی جامع حکمت عملی تشکیل دینی ہے“

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


دلچسپ و عجیب

سائنس اور ٹیکنالوجی
No News Found.

ڈیفنس

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں۔
Copyright © 2024 Baadban Tv. All Rights Reserved